ڈان لیکس:تحقیقاتی رپورٹ چند روز میں قوم کے سامنے ہوگی,کارروائی کا فیصلہ وزیراعظم کی صوابدید ہے, پرائز بانڈز سے ناجائز دولت کو قانونی بنایا گیا:اسحاق ڈار

اسلام آباد( ٹیسکو نیوز) وفاقی حکومت نے ملک میں پہلی مرتبہ اندراج کیساتھ 40ہزار روپے مالیت کے پریمیم بانڈ کااجراکردیاجبکہ وزیرخزانہ کاکہناتھاکہ غیررجسٹرڈپرائزبانڈزسے ناجائز دولت کوقانونی بنایاگیا،ملکی معیشت پرسیاست نہ کی جائے ،ڈان لیکس کی تحقیقاتی رپورٹ چندروزمیں قوم کے سامنے ہوگی جبکہ کارروائی وزیراعظم کی صوابدید پر ہے ۔بانڈاجراکے موقع پرتقریب سے خطاب میں وزیرخزانہ نے پریمیم بانڈ کو نئی شروعات قرار دیتے ہوئے بتایاکہ اس پربڑی انعامی رقم8کروڑ روپے مقرر کی گئی ہے جبکہ سہ ماہی انعامات کے ساتھ ساتھ ششماہی بنیادوں پر منافع بھی ملے گا،یہ بانڈزکوٰۃ کٹوتی سے مستثنٰی ہونگے تاہم ٹیکس کٹوتی حکومت کی متعین کردہ شرح کے مطابق ہوگی،ماسوائے بینکوں کے ہر فرد اور کمپنی یہ بانڈز خرید سکتی ہے جبکہ اسکی رجسٹریشن آج سے شروع ہوگی، انعام جیتنے والے کی رقم براہ راست اسکے اکاؤنٹ میں منتقل کر دی جائیگی،ہمیں پاکستان میں بچت کی شرح کو20فیصد سے اوپر لیکر جانا ہے اورکچھ عرصہ بعدایک لاکھ روپے کا پریمیم بانڈ بھی جاری کیا جائیگا،غیر رجسٹرڈ بانڈز کالے دھن کو سفید کرنے کیلئے استعمال کئے جارہے تھے جسے روکنے کیلئے 40 ہزار کے بانڈز کو رجسٹرڈ کرنے کا فیصلہ کیا،اب رجسٹرڈ بانڈز کا غلط استعمال نہیں ہو سکے گا۔وزیرخزانہ نے مزیدکہاکہ حکومت معیشت میں جامع اصلاحات کے ذریعے عوام کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کررہی ہے جبکہ دنیا پاکستانی معیشت کی بہتری کااعتراف کررہی ہے ،ٹیکس چوری پکڑنے کیلئے سوئٹزر لینڈ سے معلومات کے تبادلے کا معاہدہ چندروزمیں ہوجائیگا،پاکستان کے قرضوں پر گمراہ کن بیانات دئیے جاتے ہیں،معیشت پر سیاست نہ کی جائے ،ہماری ترجیح ملک کی بہتری ہونی چاہئے ۔مزیدبرآں وزیرخزانہ نے ایک انٹرویومیں کہاکہ ڈان لیکس پر کمیشن اپنا کام کر رہا ہے اوراس نے ابھی رپورٹ نہیں دی،رپورٹ آنے میں تاخیر سے کوئی نقصان نہیں ہوگا،ڈان لیکس کی رپورٹ کا حشر حمودالرحمن کمیشن کی رپورٹ جیسا نہیں ہوگا،اس بات کا حامی ہوں کہ اس رپورٹ کو منظر عام پر لایا جاناچاہئے ،آئندہ چندروز میں رپورٹ حکومت کو مل جائیگی اورپھر یہ وزیر اعظم کا استحقاق ہے کہ وہ کب اسے جاری کرتے ہیں اور کیا کارروائی کرتے ہیں؟،تاہم سب سے اہم بات یہ ہے کہ اب رپورٹ آنے کا وقت ہے اور جلدہی یہ قوم کے سامنے ہوگی۔انہوں نے مزیدکہاکہ سوئٹزر لینڈسے معلومات کی فراہمی کا نیا معاہدہ 21مارچ کے بعد نافذ العمل ہوگا ،حکومت میں کوئی بھی جماعت ہو معاہدے کا فائدہ پاکستان کو ہونا چاہئے ، معاہدے کے بغیرسوئٹزرلینڈ حکومت سے اکاؤنٹس کے بارے میں پوچھا تک نہیں جا سکتا، تحریک انصاف کے پاس اگر سوئس اکاؤنٹ سے متعلق نام ہیں تو ہمیں دیں، ارکان اسمبلی کی لڑائی قابل افسوس ہے تاہم تالی ایک سے نہیں بلکہ دونوں ہاتھوں سے بجتی ہے ،پچھلے کچھ عرصہ سے تحریک انصاف کی جانب سے جو حالات پیدا کئے گئے وہ کسی سے ڈھکے چھپے نہیں،وزیر اعظم کی ہدایت ہے کہ نون لیگ والے صبر و تحمل کا مظاہرہ کریں لیکن اگر ایک آدمی کسی کو مکا مارے گا تو دوسرا اسے سلیوٹ تو نہیں کریگا۔