پاکستانی انجنیئرکا کارنامہ موٹر سائیکل کو چوری سے بچانے کے لیے اہم ایجاد کر لی

لاہور ( ٹیسکو نیوز ) موٹر سائیکل پاکستانی کی مقبول ترین سواری ہے، موٹر سائیکل بڑے شہروں اور دیہی علاقوں میں یکساں مقبول ہے، خاص طور پر بڑے شہر جہاں ٹریفک کے مسائل زیادہ ہیں ان شہروں میں کراچی،لاہور،ملتان اور فیصل آباد جیسے شہر شامل ہیں، 2008کے ایک سروے کے مطابق ایک سال میں10,568 موٹر سائیکل چوری ہوئے اور سال 2014 سے اب تک ایک دن میں روزانہ کی بنیاد پر70سے80موٹر سائیکل چوری ہو رہے ہیں۔ موٹر سائیکل چوری کی بڑھتی ہوئی واردتوں کے بعد ایک پاکستانی نے موٹر سائیکل کو چوری سے بچانے کے لیے ایک ٹریکر ایجاد کیا جو نہ صرف موٹر سائیکل کی لوکیشن کو ظاہر کرے گا بلکہ موٹر سائیکل کو ریموٹ کے ذریعے کنٹرول بھی کیا جا سکے گا۔ اس کا موٹر ٹریکنگ ڈیوائس رکھا گیا ہے اس ڈیوائس کی خصوصیت ہے یہ کسی بھی بائیک پر لگایا جا سکتا ہے۔یہ ڈیوائس جی ایس ایم کے ساتھ کام کرے گی اور آپکے موبائل پر اس کی تمام تفصیلات موصول ہوتی رہیں گی،اس میں قابل ذکر بات یہ ہے کہ جہاں جی ایس ایم کام نہیں کرنے وہاں یہ ڈیوائس کام نہیں کرے گی لیکن جیسے ہی موٹر سائیکل دوبارہ جی ایس ایم کے ایریا میں داخل ہوگا تو ڈیوائس دوبارہ کام شروع کر دے گی۔یہ ڈیوائس موٹر سائیکل مکینک تین جگہوں پر نصب کرے گا اور چالیس منٹ میں نصب کرنے کے بعد چالو بھی کر دے گااس کے بعد آپکا موٹر سائیکل مکمل محفوظ ہو جائے گا