پی پی مان گئی، سیاسی جماعتیں فوجی عدالتوں کی مدت میں 2 سال کی توسیع پر متفق

اسلام آباد: ( ٹیسکو نیوز) پیپلز پارٹی مان گئی، سیاسی جماعتیں فوجی عدالتوں کی مدت میں دو سال توسیع پر متفق، پیر کو قومی اسمبلی میں مسودے کی منظوری دی جائے گی۔ سیاسی جماعتوں کے درمیان فوجی عدالتوں کی دو سال کی توسیع پر اتفاق ہو گیا۔ ڈیڑھ ماہ کی کوشش کے بعد آج فوجی عدالتوں کے معاملے پر اتفاق ہو گیا ہے۔ سپیکر اسمبلی نے پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس کے بعد دیگر رہنماؤں کے ہمراہ میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہاکہ سب جماعتوں کی رائے تھی کہ یہ قومی مفاد کا معاملہ ہے، جے یو آئی، جماعت اسلامی کو مذہب کے لفظ پر اعتراض تھا جبکہ پیپلز پارٹی کے نو میں سے چار مطالبات پر اتفاق ہو گیا ہے۔

ترمیمی مسودہ کل قومی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا اور سوموار کو منظور کیا جائے گا۔ ایاز صادق نے بتایا کہ منگل کو سینیٹ میں ترمیمی بل پیش کیا جائے گا، پاکستان حالت جنگ میں ہے، فوجی عدالتوں کی مدت میں دو سال کی مشروط توسیع پر اتفاق ہو گیا ہے۔ سپیکر اسمبلی نے بتایا کہ پارلیمانی کمیٹی بنائی جائے گی جو فوجی عدالتوں کے معاملے اور ملکی سلامتی کو دیکھے گی۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ دو ہزار پندرہ کے مسودے میں مذہب کے استعمال کی بجائے مذہب کے غلط استعمال کے لفظ استعمال کئے گئے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پارلیمانی کمیٹی نیشنل سکیورٹی اور فوجی عدالتوں کے معاملے کا جائزہ لے گی، آئینی ترمیم اور آرمی ایکٹ پر مکمل اتفاق ہو گیا ہے۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماء چودھری اعتزاز احسن نے کہا کہ حکومت نے ہمارے بنیادی نکات مان لئے ہیں، کچھ لو اور کچھ دو پر رضامند ہوئے ہیں۔

پی ٹی آئی رہنماء شاہ محمود قریشی نے فوجی عدالتوں کے معاملے پر اتفاق کو جمہوریت کی فتح قرار دیا۔