فکسنگ کی تحقیقات کیلئے پی سی بی کی اجازت ضروری نہیں: وزیر داخلہ

اسلام آباد: ( ٹیسکو نیوز ) پی ایس ایل سپاٹ فکسنگ کیس میں نجم سیٹھی کے بیان سے نیا تنازع کھڑا ہو گیا۔ وزیر داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ ایف آئی اے کو سپاٹ فکسنگ کیس کی تحقیقات کیلئے پی سی بی سے اجازت کی ضرورت نہیں۔ چیئرمین پی ایس ایل کو کھری کھری سناتے ہوئے چودھری نثار نے کہا کہ جس عمل سے پاکستان بدنام ہو، ایف آئی اے از خود تحقیقات کر سکتی ہے، الزامات کی بجائے ایک دوسرے سے تعاون کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ وہ نجم سیٹھی سے خود بات کریں گے، معاملے کی تحقیقات مل کر کرنی چاہیں۔

دوسری جانب ایف آئی اے اور نجم سیٹھی میں بھی ٹھن گئی ہے۔ چیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی پی سی بی کی مخالفت کے باوجود وفاقی تحقیقاتی ادارے نے سپاٹ فکسنگ کی تحقیقات جاری رکھنے کا اعلان کر دیا۔ ایف آئی اے حکام نے واضح کیا ہے کہ سپاٹ فکسنگ میں کرپشن ہوئی اور کرپشن کی تحقیقات کرنا ان کے ادارے کا کام ہے۔

ایف آئی اے حکام نے کہا کہ تحقیقات نہیں سپاٹ فکسنگ سکینڈل ملک کی بدنامی کا باعث بنا، ملوث کھلاڑیوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہو گی اور معاملے کو منطقی انجام تک پہنچایا جائیگا۔