پنجاب یونیورسٹی ہنگامہ آرائی ، وزیر ہائر ایجوکیشن نے تحقیقاتی کمیٹی بنا دی

لاہور ( ٹیسکو نیوز) پنجاب یونیورسٹی میں ثقافتی میلہ اور تصویری نمائش دو طلبا گروپوں کے درمیان ہنگامہ آرائی کی نذر ہوگئی ، وزیر ہائر ایجوکیشن اور وائس چانسلر نے ماحول کو خراب کر نے والے طلبہ کے خلاف ایکشن کا اعلان کر دیا ۔ پنجاب یونیورسٹی میں ایک بار پھر ہنگامہ آرائی ، ہر بار کی طرح ذمہ داران کے خلاف کارروائی کے بیانات دیئے گئے ، وزیر ہائر ایجوکیشن رضا علی گیلانی کا کہنا ہے کہ کیمپس تعلیم کے لیے بنا ہے لڑائی کے لیے نہیں ، اس طرح کے معاملات پر پردہ ڈالتے رہے تو ادارہ نہیں چل سکتا ، واقعہ کے بعد طلبہ کے دونوں گروپوں نے پی ایم جی چوک اور کیمپس پل پر احتجاجی مظاہرے کیے ۔ طلبہ گروپوں نے ایک دوسرے پر حملہ کرنے کے الزامات عائد کرتے ہوئے کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ جامعہ پنجاب میں ایک طرف طلبہ کا کلچر ڈے منایا جا رہا تھا اور دوسری جانب طالبات کی تصویری نمائش چل رہی تھی ۔ ایک طلبا تنظیم نے دھاوا بول دیا ، سٹال گرا دیئے اور کیمپ اکھاڑ کر آگ لگا دی ۔ بس پھر کیا تھا طالبات کے حمایتی طلبہ نے ردعمل میں لاٹھیوں اور ڈنڈوں سے ہلہ بول دیا ۔ طلبا نےایک دوسرے پر ، اینٹوں اور پتھروں کا آزادانہ استعمال کیا ۔ یونیورسٹی انتظامیہ کی درخواست پر پولیس آئی تو طلبا نے ان پر بھی پتھراؤ شروع کر دیا ۔ پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ کی ۔ طلبا کو منتشر کرنے کیلئے واٹر کینن بھی منگوا لی گئیں ۔ تصادم کے نتیجے میں انیس 19 طلبہ زخمی ہوئے ۔ ہنگامے کے بعد پولیس نے یونیورسٹی کیمپس اور ہاسٹلز میں سرچ آپریشن بھی کیا