بڑھکیں مارنے والے بتائیں،سکولوں اور ہسپتالوں کی فکر کیوں نہیں : پرویز خٹک

پشاور ( جیوعوام ) ایبٹ آباد سپورٹس گراونڈ میں ہیلی پیڈ کیوں بنایا؟،وزیراعلیٰ پرویزخٹک برہم ہوگئے، ڈی سی ایبٹ آباد کو نوٹس بھجوادیا ، کہتے ہیں بچوں کے ٹرائلز روکے جانے پر ان سے معافی مانگتا ہوں۔
ایبٹ آباد سپورٹس گراونڈ میں ہیلی پیڈ کیوں بنایا؟،وزیراعلیٰ پرویزخٹک برہم ہوگئے، ڈی سی ایبٹ آباد کو نوٹس بھجوادیا ، کہتے ہیں بچوں کے ٹرائلز روکے جانے پر ان سے معافی مانگتا ہوں۔
وزیراعلی خیبرپختونخوا کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز ایبٹ آباد میں کھیل کے میدان میں ان کیلئے ہیلی پیڈ بنایا گیا جس کا انہیں علم نہیں تھا ، ہیلی کاپٹر اترنے کیلئے بچوں کے ٹرائلزروکے جانے پر ان سے معافی مانگتاہوں ، کل کا واقعہ ڈی سی ایبٹ آباد کی غلطی کا نتیجہ تھا اور انہیں اس پر نوٹس بھجوا دیا ہے ، ان کا کہنا تھا کہ بڑھکیں مارنے والے بتائیں انھیں سکولوں اور ہسپتالوں کی فکر کیوں نہیں تھی ، گزشتہ صوبائی حکومتیں پولیس کے ذریعے بدمعاشی کرتی تھیں ، امیر مقام نیب یا جس عدالت جانا چاہتے ہیں چلے جائیں مجھے پتہ ہے کہ میرے اختیارات کیا ہیں اور اپنے وسائل کیسے خرچ کرنے ہیں؟، میں شوبازوزیراعلیٰ نہیں ہوں بلکہ اپنے دائرے میں رہتے ہوئے اختیارات کااستعمال کرتاہوں۔
گزشتہ روز پارٹی رہنماوں کو کوہستان بھاشا ڈیم کی رائلٹی کا مسئلہ حل کرنے کیلئے بھیجا تھا،ان کا کہنا تھا کہ ہمارے خلاف پروپیگنڈے کئے جا رہے ہیں کہ ہم بجٹ خرچ نہیں کر سکے ، رواں سال سوفیصد ترقیاتی بجٹ کرچ کیاجائے گا۔
پرویز خٹک نے کہا قلعہ بالا حصار کو صوبائی حکومت کے حوالے کرنے کیلئے آرمی چیف سے بات کروں گا ، جنوری 2018ء تک پشاور کا ماس ٹرانزٹ ٹرین منصوبہ مکمل ہو جائے گا جس سے چار اضلاع ایک دوسرے سے ٹرین کے ذریعے منسلک ہوجائیں گے۔