اسلامی فوجی اتحاد دہشتگردی کیخلاف ہے، ایران کو تشویش نہیں ہونی چاہئے: فاطمی

اسلام آباد ( ٹیسکو نیوز ) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے امور خارجہ طارق فاطمی نے کہا ہے کہ ایران ہمارا ہمسایہ اور دوست ملک ہے اس کے ساتھ تاریخی تعلقات ہیں پاکستان ایران کے ساتھ دوستانہ تعلقات کے فروغ کی پالیسی پر عمل پیرا ہے پاکستان ایسے کسی عمل کا حصہ نہیں بنے گا جس سے دوطرفہ تعلقات متاثر ہوں اسلامی فوجی اتحاد دہشتگردی کے خلاف ہے پاکستان کے اس اتحاد کا حصہ بننے پر ایران کو تشویش نہیں ہونی چاہیے، سرکاری ٹی وی کو دئیے گئے انٹرویو میں طارق فاطمی نے کہا ہے کہ دہشتگردی تمام ملکوں کے لیے چیلنج ہے پاکستان انسداد دہشتگردی کے لیے وسیع تجربہ رکھتا ہے شاید اس تجربے سے فائدہ اٹھانے کے لیے سعودی عرب نے جنرل راحیل شریف کی اسلامی فوجی اتحاد کی سربراہی کے لیے پاکستان سے درخواست کی ہے کسی بھی ملک بالخصوص کسی مسلم ملک کو تشویش کی ضرورت نہیں اس کے مقاصد بڑے تعمیری اور مثبت ہیں جن سے اسلامی دنیا کو فائدہ پہنچے گا۔ فاطمی نے کہا کہ جنرل راحیل شریف کی تقرری کا معاملہ ابھی مراحل میں ہے بقول خواجہ آصف ابھی اس کے وزیر دفاع ملیں گے جو ٹرم آف ریفرنس بنائیں گے۔ ایک سوال پر معاون خصوصی نے کہا کہ پاکستان تو بھارت کے ساتھ مذاکرات کی خواہش رکھتا ہے مگر بھارت کی طرف سے کوئی مثبت تاثر نہیں مل رہا۔ ہم چاہتے ہیں کہ بھارت کے ساتھ نتیجہ خیز مذاکرات ہوں تا کہ تمام تصفیہ طلب مسائل حل ہوں اور خطے میں امن و سکون پیدا ہو ہم بھارت کے ساتھ ہر جگہ اور ہر وقت بات چیت کے لیے تیار ہیں مگر تمام ایشو پر بات چیت ہونی چاہیے۔ دریں اثنا معاون خصوصی خارجہ امور طارق فاطمی نے ناروے کے سابق وزیراعظم کجیل سے ملاقات کے دوران گفتگوکرتے ہوئے کہا مقبوضہ کشمیر پر بھارتی مظالم اور بربریت میں شدت آ گئی ہے۔