غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ بڑھ گئی‘ لاہور‘ گوجرانوالہ سمیت کئی شہروں میں احتجاج

لاہور/ گوجرانوالہ/ حافظ آباد ( ٹیسکو نیوز ) ہائیڈل جنریشن میں کمی کے بعد ملک میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ شہروں اور دیہات میں بڑھ گیا ہے۔ شہروں میں 8 سے 10 گھنٹے جبکہ دیہات میں 12 سے 14 گھنٹے تک بجلی بند کی جا رہی ہے۔ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ اپریل کے ماہ میں اسی طرح قائم رہے گا جبکہ 15 مئی کے بعد بجلی کے نظام میں اضافہ ہونے سے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں کمی واقع ہو سکتی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ 15 مئی تک بجلی کی ڈیمانڈ اور سپلائی میں فرق 56 سو میگاواٹ تک رہے گا جس کے باعث لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم نہیں ہو گا۔ ساندہ کے مکینوں نے بجلی کی طویل بندش کیخلاف احتجاج کیا جس سے ٹریفک کا نظام کئی گھنٹے تک معطل رہا۔ مظاہرین نے لیسکو کیخلاف نعرے لگائے تاہم پولیس نے مذاکرات کے بعد انہیں منتشر کر دیا۔ نامہ نگاران کے مطابق گرمی شروع ہوتے ہی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے لوگوں کی زندگی اجیرن بنا دی ہے اور بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے کاروبارزندگی ٹھپ کر دیئے۔ فیصل آباد سے نمائندہ خصوصی کے مطابق وزیر مملکت پانی و بجلی عابد شیر علی نے فیسکو ہیڈکوارٹر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا لوڈشیڈنگ نہیں ہو رہی، بعض عناصر واویلا کر رہے ہیں، 2018ءتک لوڈشیڈنگ مکمل طور پر ختم ہو جائے گی۔ انہوں نے کہا مخالفین پروپیگنڈا کر رہے ہیں۔ لوڈشیڈنگ شیڈول کے مطابق ہو رہی ہے اور آئندہ دنوں میں مزید کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گرمی کی شدت بڑھتے ہی بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہو گیا، شہری علاقوں میں 10 سے12 جبکہ دیہی علاقوں میں دورانیہ 14 گھنٹے سے تجا وز کر گیا، عوام بلبلا اٹھے۔ شہریوں کا کہنا ہے عوام کو بجلی کی بلاتعطل فراہمی کے دعووں کے با وجود شہری اور دیہی علاقوں میں موسم گرما کے آغاز پر ہی بدترین لوڈشیڈنگ کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے سخت گر می کے مہینوں میں تو عوام بجلی کو ترس جائیں گے، بدترین لوڈشیڈنگ سے گھریلواور تجارتی سرگرمیاں ماند پڑ چکی ہیں، گیپکو ترجمان کے مطابق بجلی کی کھپت میں اضافے کے باعث لوڈشیڈنگ کا دورانیہ بڑھ گیا ہے گیپکو کی طلب14 سو50 میگاواٹ ہے جبکہ پیپکو کی جانب سے کمپنی کو 950 میگاواٹ بجلی فراہم کی جا رہی ہے۔ مزید براں سنی تحریک نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف کھیالی چوک میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے قاری محمد فیصل اقبال سلطانی نے کہا بھارت کو بجلی بیچنے کا خواب دیکھنے والے پہلے ملک میں بجلی پوری کریں۔ محمد یعقوب، محمد سرفراز مہر،حافظ محمد شعیب، محمد شہزاد ٹاور،محمد زوہیب قادری و دیگر نے کہا حکومت عوام کو زندہ درگور کرنے کے درپے ہے۔ شرقپور شریف اور گردونواح میں بجلی کی بدترین اور غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بدستور جاری ہے اور شہر میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 14گھنٹے سے بھی تجاوز کرجانے پر شہریوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی جبکہ شہر کے اندر کاروبار زندگی بری طرح مفلوج ہوکر رہ گئی ہے جبکہ شہر میں گیس پریشر میں نمایاں کمی سے بھی اہل علاقہ کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے شہریوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے گیس ہونے کے باوجود ہمارے ساتھ کیوں سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہا ہے۔ صفدرآباد میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں اضافہ پرمرکزی انجمن تاجراں نے زبردست احتجاج کیا۔ بجلی کی بندش نے تمام کاروبار اور عوام کی زندگی مفلوج کردی ہے۔ مرکزی انجمن تاجران کے صدر فیض الرسول قمر،حکیم محمد ارشد،میاں محمد اسلم،شیخ عظیم نواز نے کہاہے کہ ابھی گرمی کا آغاز ہوا مگر غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں اضافہ کرکے لوڈشیڈنگ کو 12گھنٹوں تک پہنچا دیا ہے جس سے تمام کاروبار متاثر ہورہے ہیں جبکہ امتحان میں مصروف طلبہ اور طالبات کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔ فیض الرسول قمر نے کہا حکمرانوں کے لوڈ شیڈنگ کے خاتمہ کیلئے تمام دعوے ٹھس ہوگئے ہیں۔ 3 سال گزرنے کے باوجود حکمران ابھی تک لوڈشیڈنگ میںکمی نہیں کر سکے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا صفدرآباد میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کی جائے۔ گرمی کے آتے ہی کاہنہ اور گرد و نواح میں لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہو گیا ہے اور دس (10)گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے جس پر شہریوں نے شدید احتجاج کیا ہے۔ کاہنہ گردو نواح صبح آٹھ بجے سے شام پانچ بجے تک بجلی آنکھ مچولی کرتی رہی۔ اہل علاقہ نے شدید احتجاج کرتے ہوئے اعلیٰ حکام سے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ نمائندہ نوائے وقت کے مطابق گرمی شروع ہوتے ہی حافظ آباد اور اسکے گردونواح مےں بجلی کی غےر اعلانےہ لوڈشےڈنگ عروج پر پہنچ گئی۔ بجلی کی اٹھارہ اٹھارہ گھنٹے بندش کےوجہ سے جہاں شہری پرےشان ہوکر رہ گئے وہاں پاورلومز فےکٹرےوں پر اےک بار پھر تالے لگنا شروع ہوگئے۔ پاورلومز لےبر ےونےن کے صدر محمد زمان انصاری نے حافظ آباد مےں بجلی کی طوےل بندش کو موجودہ حکمرانوں کی نااہلی قرار دےتے ہوئے کہا ہے ےہ سلسلہ بند نہ ہوا تو سےنکڑوں مزدور سڑکوں پر آکر حکمرانوں کا علامتی جنازہ اٹھا کراحتجاج کرےں گے۔ صباح نیوز کے مطابق کل سے ملک کے بالائی وسطی علاقوں میں مغربی ہواﺅں کے باعث بارش کا امکان ہے محکمہ موسمیات کے مطابق پیر سے جمعرات خیبر پی کے اور فاٹا، گلگت بلتستان اور کشمیر میں بارش کی امید ہے۔ منگل اور بدھ کے روز مالاکنڈ ، ہزارہ ڈویژن اور کشمیر میں موسلا دھار بارش کا امکان ہے راولپنڈی، سرگودھا، گوجرانوالہ میں پیر سے بدھ تک بارش کا امکان ہے۔ کھڈیاں خاص میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری 18گھنٹے بجلی بند ہونے پر عوام سراپا احتجاج بن گئے۔ کھڈیاں خاص میں کئی کئی گھنٹے بجلی بند رہتی ہے بجلی بند ہونے کی وجہ سے پانی کی شدید قلت ہو جاتی ہے شدید گرمی میں بوڑھے بچے خواتین ساری ساری رات جاگ کر گزارتی ہیں۔ لکی مروت میں شیڈول سے ہٹ کر لوڈشیڈنگ میں مزید اضافہ کردیا گیا ہے۔ سرگودھا اور گردونواح میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے لوگوں کو پریشان کرکے رکھ دیا ہے۔ بصیرپوراور ملحقہ 500 سے زائد دیہات میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ اوربجلی کی آنکھ مچولی نے صارفین کی زندگی اجیرن کئے رکھی۔ ہرگھنٹے بعدگھنٹہ لوڈشیڈنگ اورباربارٹرپنگ کا سلسلہ جاری رہا۔ پسرور شہر میں روزانہ 15گھنٹے اور دیہات میں 18 تا 20گھنٹے بجلی کی غیر اعلانیہ اور بغیر شیڈول لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ سیالکوٹ میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں مزید اضافہ ہو گیا۔ سیالکوٹ شہر میں آٹھ گھنٹے جبکہ دیہی علاقوں میں سولہ سے اٹھارہ گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ سے شہری پریشان ہیں اور صنعتی عمل بھی متاثر ہوا۔ جڑانوالہ و گردونواح میں گرمی شروع ہوتے ہی لوڈشیڈنگ کا جن بوتل سے باہر آگیا۔ بجلی کی بندش پر اہل علاقہ سراپا احتجاج ہیں۔ شہر جڑانوالہ‘ گردونواح میں گرمی کے شروع ہوتے ہی سارا سارا دن بجلی کی مسلسل غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ معمول بن گئی۔