پاکستانی پاپ گلوکارہ نازیہ حسن کی آج 52 ویں سالگرہ منائی جا رہی ہے

لاہور( ٹیسکو نیوز) پاکستان میں پاپ موسیقی کی بانی گلوکارہ نے بالی ووڈ کی فلم میں بھی اپنی خوبصورت آواز کا جادو جگایا پاکستان میں پاپ موسیقی کی ملکہ نازیہ حسن کے چاہنے والے ان کی 52 ویں سالگرہ منا رہے ہیں ۔ خوبصورت گلوکارہ کے مدھر گیت آج بھی سننے والوں کے کانوں میں رس گھولتے ہیں ۔ دل موہ لینے والی سریلی آواز اور پریوں جیسا حسن رکھنے والی نازیہ حسن نے گائیکی کا آغاز بچپن سے کیا ۔ خوبصورت گلوکارہ کو شہرت بھارتی فلم قربانی کے گانے سے ملی ۔ نازیہ حسن کو پاکستان میں پاپ موسیقی کے بانیوں میں ایک مانا جاتا ہے ۔ دلکش شخصیت کی مالک نازیہ حسن کے ہر گیت اور ادا کے لاکھوں دیوانے ہیں ۔ وہ پہلی پاکستانی گلوکارہ تھی جن کو فلم فئیر ایوارڈ سے نوازا گیا ۔ نازیہ حسن صرف 35 سال کی عمر میں کینسر جیسے موذی مرض کا شکار ہو کر چل بسی ۔ نازیہ حسن نے سولو گلوکاری بھی کی لیکن اپنے بھائی زوہیب حسن کے ساتھ ان کی جوڑی کوبے حد سراہا گیا ۔ دونوں بہن بھائیوں نے 1981 میں اپنا البم ڈسکو دیوانے ریلیز کیا تو اس نے موسیقی کی دنیا میں تہلکہ مچا دیا ۔ اس البم کو نازیہ اور زوہیب کی توقعات سے بڑھ کر کامیابی حاصل ہوئی ۔ نازیہ حسن کی آواز میں گائے ہوئے اردو اور پنجابی گیتوں کو یکساں مقبولیت حاصل ہوئی ، ان کے مشہور گیتوں میں لیکن میرا دل میرا دل رو رہا ہے ، ٹالی دے تھلے بے کے کریے پیار دیاں گلاں ، ڈم ڈم ڈی ڈی ڈم ڈم ، آپ جیسا کوئی میری زندگی میں آئے ، دوستی ایسا ناتہ ، بوم بوم ، سمیت متعدد یادگار گیت شامل ہیں ۔ نازیہ حسن کی کم عمری میں موت نے لالی ووڈ انڈسٹری کو انتہائی نقصان پہنچایا ۔ ان کی وفات سے پاکستان میں پاپ موسیقی کے ایک زریں عہد کا خاتمہ ہوگیا ۔