دیویا بھارتی کو مداحوں سے بچھڑے 24 برس بیت گئے

لاہور (ٹیسکو نیوز ) بالی ووڈ اداکارہ دیویا بھارتی کی آج 24 ویں برسی ہے ۔ خوبرو اداکارہ آج بھی شائقین کے دلوں پر راج کرتی ہیں ۔ دیویا بھارتی نے بالی ووڈ میں قدم فلم وشواتما سے رکھا ۔ معصوم چہرے والی دیویا بھارتی نے اپنی اداکاری سے لاکھوں مداح بنائے ۔ 1990 سے 93 تک دیویا نے بالی ووڈ کو 13 کامیاب فلمیں دیں ۔ تین سالہ کیرئیر میں ہی وہ بالی ووڈ کی ٹاپ اداکاراؤں میں شامل ہوگئیں ، فلم دیوانہ میں دیویا کی جاندار اداکاری پر انہیں فلم فئیر ایوارڈ سے نوازا گیا ۔ دیویا بھارتی کو فلم دل کا کیا قصور نے بالی ووڈ میں ایک نئی پہچان دی ، اس کے بعد ان کی آنے والی فلم رنگ ، شتریا اور شطرنج تھیں ۔ شطرنج دیویا بھارتی کی زندگی کی آخری فلم تھی جو ان کی موت کی وجہ سے تاخیر کا شکار ہوئی اور ان کی موت کے بعد اس فلم کو ریلیز کیا گیا ۔ دیویا بھارتی کے حوالے سے ایک تنازعہ بھی میڈیا سے زیر بحث رہا ۔
دیویا بھارتی نے فلمساز و ہدایت کار ساجد نڈیا والا سے دوستی کے بعد محبت کی شادی کر لی تھی ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ دیویا بھارتی نے ساجد سے شادی کرنے سے قبل اسلام قبول کر لیا تھا اور ان کا اسلامی نام ثنا ساجد رکھا گیا تھا ۔ یہ تنازعہ ان کی موت کے روز ان کی آخری رسومات تک زیر بحث رہا ، ہر کسی کو انتظار تھا کہ دیویا بھارتی مسلمان ہیں یا ہندو ، اور ان کی آخری رسومات کس مذہب کے تحت ادا کی جائیں گی ۔ بعد ازاں انتہا پسند ہندوئوں کے خوف کی وجہ سے دیویا بھارتی کو ہندو رسوم و رواج کے تحت چتا پر لٹا کر آگ لگا دی گئی ۔ دیویا کی موت بھی انتہائی مشکوک حالات میں ہوئی تھی ، وہ شادی کے بعد ورسووا میں تلسی بلڈنگ میں اپنے فلیٹ میں موجود تھیں اور مبینہ طور پر شراب کے نشے میں دھت ہونے کی وجہ سے کھڑکی سے گر گئیں ۔ دیویا بھارتی کی موت کا الزام ان کے شوہر پر بھی لگایا گیا تاہم ان کی موت میں خودکشی ، شراب کے نشے میں پھسل کر کھڑکی سے نیچے گرجانا اور کسی کا دھکا دے کر قتل کرنے جیسے امکانات بھی ظاہر کئے گئے تھے ۔ ان کی زندگی پر ایک فلم لو بیہائنڈ دا بارڈر بھی بنانے کا اعلان کیا گیا تھا لیکن اس کا آج تک آغاز نہیں ہوسکا