وزیر اعظم بن کر ادارے بنانا اور انسانی ترقی چاہتا ہوں: عمران خان

اسلام آباد (ٹیسکو نیوز) اناما کیس کا فیصلہ پاکستان کی سیاست کو بدل دے گا، عمران خان کو یقین، کہتے ہیں بار بار کی فوجی مداخلت کے باعث جمہوری نظام کمزور ہوا۔
چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے اسلام آباد میں بزنس سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی میں سیاست سیکھی، اگر برطانیہ نہ جاتا تو سیاستدان نہ ہوتا۔ عمران خان نے کہا کہ سیاست میں لوگ صرف پیسہ بنانے آتے ہیں۔ کرکٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کے پاس کرکٹ بورڈ کا چیئرمین منتخب کرنے کا اختیار نہیں ہونا چاہئے، اداروں کی تباہی کی وجہ سے پاکستان کو مسائل کا سامنا ہے، مصباح الحق کو بہت دیر بعد ٹیم میں شامل کیا گیا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا میں پولیس سے سیاسی مداخلت ختم کی، قومی اسمبلی میں ساری جماعتوں نے پاناما کیس کی تحقیقات کا مطالبہ کیا، پاناما کیس کا فیصلہ پاکستان کی سیاست کو بدل کر رکھ دے گا۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ پاناما کیس میں انصاف کیلئے کھڑے ہوئے، اس وقت تمام توجہ پاناما کی پچ پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ جہاں تبدیلی نہ آئے، معاشرے تباہ ہو جاتے ہیں، امید ہے پاناما کیس کا فیصلہ اگلے ہفتے آ جائے گا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ میری سیاسی جد و جہد کو ہمیشہ وزرات عظمیٰ حاصل کرنے کی کوشش کہا گیا، ایسا وزیر اعظم بننا چاہتا ہوں جو ادارے بنائے، واحد کپتان ہوں جس نے مرضی سے کپتانی چھوڑی، میرے بعد مصباح واحد کپتان ہو گا جو عزت سے جائے گا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ الیکشن فکسر اب میچ فکسر بن گئے ہیں۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ لوگوں کو جنگ کیلئے نہیں، امن کیلئے اکٹھا کرنا چاہئے، اسی کی دہائی میں امریکی جنگ میں شمولیت بڑی غلطی تھی، ڈالر کیلئے جہادی بنائے پھر ڈالر کیلئے جہادیوں کو مارا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کا انتخاب ایک مہذب قوم کا زوال ہے، ٹرمپ میری توقع سے بھی زیادہ برے نکلے۔ تقریب کے دوران جب عمران خان سے پوچھا گیا کہ آپ کا پسندیدہ پاکستانی سیاستدان کون ہے تو وہ جواب گول کر گئے۔
انہوں نے دعویٰ کیا کہ خیبر پختونخوا میں پیسہ سڑکوں پر نہیں، مستقبل پر خرچ کیا جا رہا ہے، خیبر پختونخوا میں سب سے زیادہ انسانی ترقی ہو رہی ہے۔ دریں اثناء، پیپلز پارٹی کے بعد عمران خان نے بھی گورنر سندھ کی کلاس لے لی، کہتے ہیں ان سے ایسے ہی احمقانہ بیان کی امید تھی، کراچی میں امن جنرل راحیل شریف کے دور میں لوٹا، محمد زبیر کو تو شریف خاندان کی خدمت اور کرپشن چھپانے کے انعام میں گورنر بنایا گیا۔