پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال تیسرے روز بھی جاری

لاہور: پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز نے ایک بار پھر ہڑتال شروع کر دی اور مریض خوار ہو گئے۔ پنجاب کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن ریفارمز ایکٹ کے خلاف ہڑتال کر رہے ہیں۔ایکٹ کے خلاف پنجاب کے کئی شہروں میں ینگ ڈاکٹرز سراپا احتجاج ہیں اور او پی ڈی میں کام بند کر رکھا ہے۔

لاہور کے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی، سروسز، چلڈرن اور شیخ زید سمیت دیگر سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز نے کام بند کر دیا ہے جب کہ راولپنڈی میں بھی ینگ ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف نے او پی ڈی کا بائیکاٹ کر دیا۔

فیصل آباد کے الائیڈ اور سول اسپتال سمیت دیگر سرکاری اسپتالوں میں بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے جب کہ ملتان کے نشتر اسپتال کے آؤٹ ڈور وارڈز بھی بند ہیں۔ سرگودھا کے ڈی ایچ کیو اسپتال میں بھی ہیلتھ بل کے خلاف ینگ ڈاکٹرز کی اپیل پر جزوی ہڑتال کی جا رہی ہے۔

ینگ ڈاکٹرز اور پیرامیڈیکل اسٹاف کی ہڑتال کے سبب او پی ڈی میں علاج و معالجے کی غرض سے آنے والے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے اور مریض نجی اسپتالوں کے دھکے کھانے پر مجبور ہیں۔

ینگ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے مجوزہ

اپنا تبصرہ بھیجیں