سابق ہیڈ کوچ مکی آرتھر انتظامیہ کیخاف پھٹ پڑے ,حیران کن انکشافات

لاہور:قومی کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جن کرکٹ کمیٹی کے لوگوں پراعتماد کا اظہار کیا ان سے بات کچھ کہی جاتی تھی اور وہ کرتے کچھ اور تھے۔

انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ کرکٹ کمیٹی کے اجلاس کے دوران میں نے یہ کہا تھا کہ مصباح الحق پاکستان کی کرکٹ کے گاڈ فادر ہیں۔مصباح ایک بہترین شخصیت کے حامل انسان ہیں اور وہ بحیثیت کوچ بہترین کام کریں گے۔

کرکٹ کمیٹی کے ممبران جن میں مصباح الحق اور وسیم اکرم شامل تھے کے نام میں نے ہی تجویز کئے اور انہوں نے ہی میری مخالفت کر دی۔مکی آرتھر نے کہا کہ عالمی کپ کے بعد بننے والی کرکٹ کمیٹی میں میرے سے بہت سوالات کئے گئے اور چند سوال ایسے تھے جو صرف رائے پر مبنی تھے اور حقائق سے ان کا کوئی تعلق نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹی ممبران نے غلط حقائق کو سامنے رکھتے ہوئے ہی فیصلہ کیا، بہرحال میرا پاکستان کے ساتھ تین سال کا سفر انتہائی شاندار رہا۔پاکستان سپر لیگ کی ٹیم کراچی کنگز کی کوچنگ کے حوالے سے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ مجھے اس پر کوئی اعتراض نہیں بلکہ میں اس فرنچائز کے ساتھ اپنا سفر جاری رکھنا چاہوں گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ تین سال کے سفر میں بہت محنت کی، ون ڈے کرکٹ میں چیمپیئنر ٹرافی جیتی جبکہ ٹی ٹونٹی کی رینکنگ میں پہلے نمبر پر آ گئے۔ٹیم کا بہتری کی جانب سفر جاری تھا، امید کرتا ہوں مصباح کی کوچنگ میں بھی ٹیم اچھی کارکردگی دکھائے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں