پاکستان میں گزشتہ24 گھنٹوں میں مزید 89 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، ڈاکٹر ظفر مرزا

پوری دنیا میں تباہی مچانے والے کورونا وائرس نے اب پاکستان میں اپنے قدم جما لئے ہیں جس کے بعد حکومت کی جانب سے اس کو روکنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔ اسی سلسلے میں صوبائی حکومتوں کی جانب سے مکمل لاک ڈاؤں کا اعلان کیا گیا تھا جس کے بعد اس وقت پورے ملک میں فوج کو تعینات کر دیا گیا ہے تا کہ لوگوں کو گھروں سے نکلنے سے روکا جائے۔
موجودہ صورتحال پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 89 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جس کے بعد اب ملک بھر میں متاثرہ افراد کی تعداد 892 ہو گئی ہے جبکہ 5کی حالت تشویش ناک بتائی گئی ہے۔ اسی پر مزید بات کرتے ہوئے ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ سخت اقدامات اسی لئے کئے جا رہے ہیں تا کہ ہماری عوام کو ہر قسم کا تحفظ فراہم کیا جائے۔

اس لئے ہم عوام سے بھی اپیل کریں گے کہ وہ تعاون کریں اور گھروں میں رہیں۔ خیال رہے کہ پاکستان میں ابھی تک 7 افراد کورونا وائرس کا شکار ہو کر ہلاک ہو چکے ہیں۔ ایک 57 سالہ خاتون آج لاہور کے میو ہسپتال میں کورونا وائر س سے لڑتی ہوئی جاں بحق ہو گئی ہے۔ پوری دنیا میں کورونا وائرس کو روکنے کے اقدامات کئے جا رہے ہیںلیکن اس میں ابھی تک کسی قسم کی کوئی کامیابی سامنے نہیںآئی۔
دنیا بھر میں ابھی تک کورونا وائرس نے 3 لاکھ 80 ہزار افراد کو متاثر کر دیاہے جبکہ 16 ہزار سے زیادہ افراد اس کی وجہ سے ہلاک ہو چکے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت نے بھی عالمی سطح پر میڈیکل ایمرجنسی نافذ کر دی تھی جس کے بعد دنیا بھر کے ماہرین کی جانب سے ویکسین تیار کرنے کی کوشش کی جا رہی لیکن اس میںابھی تک کسی قسم کی کوئی کامیابی سامنے نہیںآئی۔ لیکن امریکہ، آسٹریلیا اور چین کے ماہرین کا کہنا ہے کہ وہ جلد ہی اس کی ویکسین تیار کرنےمیں کامیا ب ہو جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں