مکہ کا رہائشی شہری کورونا وائرس کی وجہ سے جاں بحق ہوگیا

سعودی میں کورونا وائرس کا دوسری مریض جاں بحق ہوگیا ہے۔ اب تک مملکت میں کورونا وائرس کی وجہ سے جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 2ہوگئی ہے۔ سعودی وزیرِ صحت نے کورونا کی وجہ سے دوسری ہلاکت کی تصدیق کردی ہے۔ وزیرِ صحت نے مزید بتایا ہے کہ مملکت میں کورونا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 900ہوگئی ہے۔ وزیرِ صحت نے کہا ہے کہ آج مملکت میں کورونا کے 133 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔
دوسری جانب سعودی عرب میں بڑھتے ہوئے کورونا وائرس کے خطرات کو مدنظررکھتے ہوئے شاہ حکومت کی جانب سے تمام ریجنوں میں کرفیو لگانے کا اعلان کر دیا گیا ہے جس کے بعد کل دوپہر 3 بجے سے تمام ریجنز میں مکمل کرفیو لگا دیا جائے گا۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبد العزیز نے شاہی فرمان جاری کرتے ہوئے نئے اقدامات کی منظوری دی ہے۔

حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کے مطابق کسی ایک ریجن کے شخص کو کسی بھی دوسری ریجن میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ ریاض ، مکہ اور مدینہ میں شہروں کے حوالے سے کرفیو لگا دیا گیا ہے جس کےمطابق کوئی بھی شخص نہ ان تین شہروں میں داخل ہو سکتا ہےاور نہ ہی ان شہروں سے باہر جا سکتا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ عوام کی بہتری او ر کورونا وائرس کو کنٹرول کرنے کے لئے ہی کیا گیا ہے۔
مزید بتایا گیا ہے کہ کرفیو سے صرف ان لوگوں کو استثناء ہو گا جنہیں لاک ڈاؤں میں شاہ سلمان کی جانب سےد یا گیا تھا لیکن اس مرتبہ صرف اسی صورت میں استثناء دیا جائے گا جب کوئی ایمرجنسی ہو گی، ورنہ کسی شخص کو باہرجانے کی اجازت نہ ہو گی ۔سعودی حکومت کی جانب سے کرفیو ختم کرنے کا وقت 27 رجب مقرر کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ دنیا بھر میں کورونا وائرس نے تباہی مچائی ہوئی ہے جس کے بعد سعودی عرب نے بھی حفاظتی اقدامات کرتے ہوئے پہلے مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا تھا لیکن اب کرفیو لگانے کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں