وزیر اعظم نے لاک ڈاﺅن کے دوران خوراک کی سپلائی کے لیے ٹائیگر فورس تشکیل دےدی

وزیر اعظم عمران خان نے کورونا وائرس کے باعث لاک ڈاﺅن سے پریشان حال غریبوں کو گھر پر کھانا پہنچانے اور اس وائرس کی روک تھام کے لیے کام کرنے والے رضاکاروں پر مشتمل کورونا ریلیف ٹائیگر فورس تشکیل دے دی ہے. وزارتِ یوتھ افیئرز کے مطابق وزارتِ یوتھ افیئرز نے کورونا ریلیف ٹائیگر فورس پر کام شروع کر دیا ہے، اس فورس میں رضاکاروں کی رجسٹریشن 31 مارچ سے سٹیزن پورٹل پر شروع ہوگی.وزارتِ یوتھ افیئرز کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں ڈیجیٹل فارم تیار کیا جا رہا ہے جو 31 مارچ کو سٹیزن پورٹل پر اپ لوڈ کردیا جائے گا، اس ڈیجیٹل فارم میں نام، پتہ، عمر، موبائل نمبر، یونین کونسل و ضلع کی تفصیلات شامل ہوں گی.

وزارتِ یوتھ افیئرز نے کہا ہے کہ کورونا ریلیف ٹائیگرز فورس کے لیے رضاکاروں کی رجسٹریشن 10 اپریل تک مکمل ہو جائے گی، فورس کی تشکیل ہر یونین کونسل میں کی جائے گی وزارتِ یوتھ افیئرز کے مطابق کورونا ریلیف ٹائیگرز فورس میں 18 سال سے زیادہ عمر کے نوجوان رجسٹریشن کراسکیں گے، اس فورس میں تمام سیاسی جماعتوں کے نوجوان رجسٹریشن کرا سکیں گے.وزارتِ یوتھ افیئرز نے بتایا ہے کہ کورونا ریلیف ٹائیگر فورس تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے ماتحت کام کرے گی، جس کے لیے ملک بھر کے تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے ساتھ اس کا ڈیٹا شیئر کیا جائے گا‘وزارتِ یوتھ افیئرز کا کہنا ہے کہ کورونا ریلیف ٹائیگر فورس مکمل لاک ڈاﺅن یا کرفیو کی صورت میں متحرک ہو کر کام کرے گی.وزارتِ یوتھ افیئرز نے مزید بتایا ہے کہ کورونا ٹائیگرز فورس ہنگامی حالات میں گھروں تک راشن سپلائی کرے گی اور خوراک پہنچائے گی وزارتِ یوتھ افیئرز کا یہ بھی کہنا ہے کہ کورونا ٹائیگرز فورس ملک بھر میں ذخیرہ اندوزوں کی نشاندہی کر سکے گی، اس کے رضا کار قرنطینہ سینٹرز میں کورونا کے مشتبہ مریضوں کی نگرانی بھی کریں گے.