لاک ڈاؤن سے ریلوے کو ہر ہفتے ایک ارب 20 کروڑ کا نقصان ہورہا ہے، شیخ رشید

لاک ڈاؤن سے ریلوے کو ہر ہفتے ایک ارب 20 کروڑ کا نقصان ہو رہا ہے۔ لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ہم حکومت کے فیصلے کے پابند ہیں لیکن لاک ڈاون ختم کیا تو 20 مسافر ٹرینیں چلائیں گے، ٹرینیں چلانے کے لیےلوگوں کا اصرار ہے اور مجبوریاں ہیں۔ہمیں ہر ہفتے 20 کروڑ کا نقصان ہو رہا ہے۔
ہم 15 تاریخ سے وزیراعظم عمران خان کی اجازت کے بعد ٹرینیں چلانی شروع کریں گے۔لاک ڈاون سے پہلے ہم نے رکارڈ بیس ٹرینیں چلائی ہیں، ہم آخری 2 روز میں 40 ٹرینیں نہ چلاتے تو کراچی میں لوگ ایڑیاں رگڑ رہے ہوتے، ہم نےآخری 2 روز میں 40 ٹرینوں سے ایک لاکھ 65 ہزار مسافروں کو منتقل کیا، ریلوےنے آخری 2 روز میں تاریخی کردار ادا کیا ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ریلوے کے پیشنرز اور تنخواہ داروں کو کوئی پریشانی نہیں ہوگی، ایک لاکھ 65 ہزار لوگوں کو ہم نے ریلوے سے گھروں کو بھیجا ہے، ہمارے پاس 1670کولی ہیں، ان تمام کا ڈیٹا احساس پروگرام میں بھیجا ہے۔

مزید بات کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ریلوے کے محکمے میں کوئی شخص کورونا کا شکار نہیں ہوا ۔ ہمارے حالات دیگر ممالک سے بہت بہتر ہیں، اس لئے ہمیں زیادہ پریشان نہیں ہونا چاہیئے اور صبر وتحمل سے کام کرنا چاہیئے۔ ٹرینوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 14 اپریل تک صورتحال دیکھیں گے، اگر وائرس مزید پھیلا تو ٹرینیں نہیں چلائیں گے۔
دنیا بھر کی طرح اس وقت کورونا وائرس نے پاکستان میں بھی اپنے قدم جمائے ہوئے ہیں۔ پاکستان میں اب تک کورونا وائرس کا شکار ہو کر 40 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 2700 سے زیادہ افراد کورونا وائرس سے متاثر ہو گئے ہی، حکومت کی جانب سے اس وائرس کو مزید پھیلنے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے ، اسی سلسلے میں ملک بھر میںلاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے تا کہ لوگوں کو گھروں میں رہنے کا پابند کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں