مارچ کے دوران پٹرولیم مصنوعات کی فروخت سب سے کم رہی

مارچ 2020 کے دوران گزشتہ 10 سال کے مقابلہ میں پٹرولیم مصنوعات کی فروخت سب سے کم رہی ہے اور تیل کی فروخت میں نمایاں کمی کا بڑا سبب کورونا سے تحتفظ کے لئے لاک ڈائون اقدامات کے تحت ہے۔عارف حبیب لمیٹڈ کی تجزیاتی رپورٹ کے مطابق 2006 کے بعد مارچ 2020 میں تیل کی فروخت 1.03 ملین ٹن تک کم ہو گئی جو گزشتہ 10سالوں کے دوران کسی ایک مہینہ کے دوران ہونے والے سب سے کم فروخت ہے۔
فروری 2020کے دوران فرخت کا حجم 1.1ملن ٹن رہا تھا جبکہ مارچ 2019 کے دوران آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کی فروخت 1.46 ملین ٹن رہی تھی۔اس طرح مارچ 2019 کے مقابلہ میں مارچ 2020 کے دوران تیل کی فروخت میں 29فیصد جبکہ فروری 2019 کے مقابلہ میں مارچ 2020 کے دوران تیل کی فروخت میں 7فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

عارف حبیب لمیٹڈ نے اپنی تجزیاتی رپورٹ میں کہا کہ فروری کے مقابلہ میں مارچ میں زیادہ دن ہوئے ہیں لیکن پھر بھی تیل کی فروخت کم ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مارچ 2019 کے مقابلہ میں مارچ 2020 کے دوران فرنس آئل کی فروخت میں 63فیصد جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل کی فروخت میں 32فیصد اور پٹرول کی فروخت میں 15فیصڈ کمی ریاکرڈ کی گئی ہے جس کے باعث تیل کی مجموعی فروخت مارچ 2019 کے مقابلہ میں 29فیصد اور فروری 2020 کے مقابلہ میں 7 فیصد کم ہو گئی۔