خطرات مول لینا کارکردگی کے عدم تسلسل کا باعث بنا:فخر زمان

قومی کرکٹ ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین فخرزمان کا کہنا ہے کہ بیٹنگ کے دوران بلند درجہ خطرات مول لینا ان کیلئے کارکردگی کے عدم تسلسل کا باعث بنا لہٰذا وہ اپنی خامیوں کو دور کرتے ہوئے کھیل کے مجموعی معیار کو بہتر بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اپنی یوٹیوب ویڈیو میں فخر زمان کا کہنا تھا کہ موجودہ پاکستانی ٹیم میں بابراعظم کے سوا کوئی ایک ایسا بیٹسمین بتائیں جو تسلسل سے تینوں فارمیٹس میں بہترین کھیل پیش کر رہا ہے اور چونکہ وہ ٹی 20کرکٹ کھیلتے ہیں جو بلند درجہ خطرات سے لبریز فارمیٹ ہے تو انہیں بطور اوپنر بہترین سٹرائیک ریٹ کی توقعات بھی پوری کرنی پڑتی ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ تیزی سے سکورنگ کیلئے انہیں اپنے سٹروکس کھیلنا پڑتے ہیں اور جب بہت زیادہ شاٹس کھیلے جائیں تو آؤٹ ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے تاہم وہ اپنی جانب سے بہترین کوشش کر رہے ہیں کہ اپنی بیٹنگ کی خامیوں کو دور کریں تاکہ اس پلاننگ کا ڈٹ کر مقابلہ کیا جائے جو دیگر ٹیمیں ان کیلئے تیار کرتی ہیں ۔

بائیں ہاتھ کے بیٹسمین نے اعتراف کیا کہ انہیں پی ایس ایل فائیو میں سپنرز کیخلاف مشکلات درپیش رہیں اور وہ سیزن کے دوران 6 سے 7 مرتبہ سپنرز کیخلاف آؤٹ ہوئے لیکن اس کی وجہ یہ تھی کہ انہوں نے سپنرز کیخلاف پہلی بال سے اٹیک کا فیصلہ کیا اور ایسا کرتے ہوئے غلطیوں کا امکان بھی بڑھ جاتا ہے لیکن وہ آئندہ کوشش کریں گے کہ سپن باؤلرز کیخلاف اپنی وکٹ نہ گنوائیں، جس کیلئے فٹنس کی بہتری کے ساتھ غلطیوں پر بھی کام جاری ہے ۔