چیف جسٹس پاکستان کے کمرہ عدالت کے اہلکار کورونا وائرس کی تشخیص

آزاد کشمیر اور بلوچستان میں کورونا وائرس کے نئے مریض سامنے آنے کے بعد ملک میں مصدقہ مریضوںکی تعداد 5825 ہو گئی ہے جبکہ 101افراد ہلاک ہوچکے ہیں‘آزاد کشمیر کے حکام کے مطابق مزید 3افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جس کے بعد کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد 46 ہو گی ہے.
پاکستان میں کل متاثرین کی تعداد 5812 ہے جن میں سے پنجاب میں 2856‘سندھ میں1452‘ خیبر پختونخوا میں 800‘ بلوچستان میں 231‘ گلگت بلتستان میں 233 وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 131 اور آزاد کشمیر میں 43 مصدقہ مریض ہیں.

ادھروفاقی کابینہ نے پاکستان میں ذخیرہ اندوزی کے خلاف آرڈیننس لانے کے فیصلے کی منظوری دے دی ہے وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ہونے والوں فیصلوں پر صحافیوں کو بریفنگ دی.

معاون خصوصی کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں کی توثیق دی گئی ہے اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف قانون لایا جا رہا ہے جس کے تحت ذخیرہ اندوزوں کو سخت سے سخت سزائیں دینے کی تجویز ہے. معاون خصوصی نے بتایاکہ آج وزیر اعظم عمران خان قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو کریں گے اور اجلاس کے فیصلوں سے آگاہ کریں گے.
معاون خصوصی نے آگاہ کیا کہ کابینہ کے سامنے آٹھ ایجنڈہ آئٹم رکھے گئے تھے کابینہ کے ممبران نے اپنے اپنے حلقوں میں احساس پروگرام کے تحت رقوم کی تقسیم کے حوالے سے آگاہ کیا اور مزید بہتری کے حوالے سے تجاویز بھی دی گئیں. فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ اس موقع پر وزیر اعظم نے کہا کہ یہ پروگرام میرٹ کی بنیاد پر شروع کیا گیا ہے اور یہ تمام تر سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہے وزیر اعظم نے اس عزم کا اظہار کیا کہ حکومت پاکستانیوں کے دکھوں کا مداوا کرنے کی کوششوں میں مصروف رہے گی.
دوسری جانب نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر نے امدادی سرگرمیوں اور لاک ڈاﺅن سے متعلق نئی تجاویز تیار کر لی ہیں جنہیںقومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں پیش کیا جائے گا وفاقی وزیرِ منصوبہ بندی اسد عمر کی زیر صدارت نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے اعلی سطحی اجلاس میں قومی رابطہ کمیٹی سے حتمی منظوری کے لیے سفارشات تیار کی گئی ہیں. یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ اگلے تین ہفتوں میں 1959 مسافروں کو وطن واپس لایا جائے گا تمام پھنسے پاکستانیوں کی واپسی میں تین ماہ لگیں گے اجلاس میں ہر ہفتے 8000 پاکستانیوں کی واپسی یقینی بنانے کی تجویز دی گئی ہے.
ان تمام مسافروں کو قرنطینہ مراکز میں رکھا جائے گا ایک تجویز کے مطابق ہوائی سفری سے متعلق ایس او پیز کا 16 اپریل کو دوبارہ جائزہ لیا جائے گا. سیالکوٹ کے علاوہ باقی سات بین الاقوامی ایئرپورٹس کو کھولا جائے گا علاوہ ازیں وزارت داخلہ نے سرحدیں مزید دو ہفتوں تک بند رکھنے کا نوٹیفیکیشن جاری کیا ہے اس کے مطابق واہگہ بارڈر 29 اپریل تک جبکہ مغربی سرحد 26 اپریل تک بند رہے گے اورکرتارپور راہداری کو 24 اپریل تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے.
اجلاس کو بتایا گیا کہ ملک بھر میں نقل و حرکت کے لیے 26 ٹرینیں دستیاب ہیں جبکہ ریلوے کے 48 ہسپتال اور 36 ڈسپنسریاں دستیاب ہیںاجلاس میں بتایا گیا ہے کہ صنعتوں کو مرحلہ وار کھولنے کے لیے ہدایات تیار کر لی گئی ہیں جن کے مطابق مالکان ان پر عمل کرانے کے پابند ہوں گے. رمضان المبارک میں عبادات سے متعلق ہدایات علما سے مشاورت سے تیار ہوں گی جس میں تراویح، پانچ وقت کی نمازیں اور روزہ کشائی کے حوالے سے امور طے کیے جائیں گے رمضان بازار اور جمعہ بازار کے انعقاد کے لیے خصوصی انتظامات کیے جائیں گے وزارت داخلہ کو علما سے مشاورت کی ذمہ داری سونپی دی گئی ہیں اجلاس کو بتایا گیا کہ پاکستان انجینئرنگ کونسل پانچ اقسام کے وینٹی لیٹرز تیار کر رہی ہے.
ادھرپنجاب حکومت نے اپنے سرکاری محکمے 15 اپریل سے کھولنے کا فیصلہ کیا ہے جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے مطابق تمام محکموں میں کورونا وائرس سے بچاﺅ کے لیے ایس اوپیز یعنی ہدایات پر عملدرآمد یقینی بنانے کا حکم دیا گیا ہے انتظامیہ کے سیکرٹری صاحبان کام کے لیے دفاتر آ سکیں گے‘ نوٹیفیکیشن کے مطابق کچھ عملہ گھروں میں بیٹھ کر آئن لائن کام کرے گا.
کورونا وائرس کے پیش نظر منگل کو ضلع اٹک میں حسن ابدال کے مقام پر گرودوارہ پنجہ صاحب میں بیساکھی میلہ سادگی سے منایا گیا ہے اس موقع پر حکام نے امید ظاہر کی ہے کہ عالمی وبا کے خاتمے کے بعد سکھ برادری دوبارہ اپنے مقدس مقامات کا دورہ کر سکے گی ہر سال سکھوں کی ایک بڑی تعداد یہ تہوار منانے کے لیے گرودوارہ پنجہ صاحب آتی ہے پاکسان میں سکھ برادری نے کورونا کے خاتمے کے لیے خصوصی دعائیں بھی مانگی ہیں.
دریں اثناءبرطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق چیف جسٹس آف پاکستان کے مخصوص سپریم کورٹ کے کورٹ روم نمبرون میں کام کرنے والے ایک اہلکار میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے جس کے بعد عدلت میں منگل کے روز سماعت کے لیے مقرر کیے جانے والے تمام مقدمات کی فہرست کو معطل کر دیا گیا ہے‘ان مقدمات کی سماعت کے لیے دوبارہ فہرست دوبارہ بنائی جائے گی.