کرونا کی تباہ کاریوں کے باوجود ایران کا مذہبی مزارات کھولنے کا اعلان

ایران میں کرونا کی وبا کے تسلسل کے باوجود حکومت نے مشہد، قم اور شیراز میں موجود مزارات کھولنے کی تیاری شروع کی ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق 23 اپریل کو ماہ صیام کے آغاز کے ساتھ ہی ایران نے مزارات کھولنے کا عندیہ دیا ہے۔خیال رہے کہ ایران میں کرونا کی وبا سے نمٹنے میں ناکامی پرحکومت کو عوامی حلقوں کی طرف سے کڑی تنقید کا سامنا ہے۔ ایران میں کرونا پھیلنے کے بعد بروقت مزارات پرپابندی نہیں لگائی گئی جس کے نتیجے میں کرونا کی وبا دوسرے علاقوں میں پھیلتی چلی گئی۔گذشتہ جمعہ کو

ایرانی وزارت صحت کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ وزارت صحت کرونا کی روک تھام کے لیے خالص سائنس انداز اپنا رہی ہے۔دوسری طرف ایران میں سیاسی ہ نمائوں، ارکان پارلیمنٹ اور ماہرین کی جانب سے کرونا کے معاملے میں لاپرواہی برتنے پر حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔وزارت صحت کا کہنا تھا کہ بڑے مذہبی اجتماعات پرپابندی بدستور برقرار ہے۔ جب کہ دوسری طرف ایران کی مذہبی اتھارٹی ملک بھرمیں مزاروں اور دیگر مذہبی مراکز کو زائرین کے لیے کھولنے کی تیاری کررہی ہے۔ایران کے شمال مشرقی شہرمشہد میں شیعہ مزارات کے ایک عہدیدار احمد مارفی نے جمعہ کے روز کہا تھا کہ شہر میں مزارات کھولنے کے لیے انتظامات کیے جا رہے ہیں۔