سعودی عرب میں کورونا کے 1289 نئے کیسز سامنے آگئے، مزید 5مریض جاں بحق

سعودی عرب میں کورونا کے 1289 نئے کیسز سامنے آگئے ہیں جبکہ مزید 5مریض جاں بحق ہوگئے ہیں جس کے بعد مملکت میں کورونا سے متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 18ہزار 811ہوگئی ہے جبکہ جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد 144تک پہنچ گئی ہے۔ سعودی وزارتِ صحت کے مطابق مملکت میں مزید 174کورونا مریض صحتیاب ہوگئے ہیں جس کے بعد صتیاب ہونے والے افراد کی تعداد2531 ہوگئی ہے۔
سعودی عرب میں کورونا کے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور اب تک نئے آنے والے مریضوں کی تعداد میں کمی نہیں ہوسکی ہے۔ دوسری جانب سعودی حکومت نے گزشتہ روز مملکت کے کئی شہروں اور صوبوں میں نافذ کرفیو میں نرمی کا اعلان کیا تھا، تاہم مکہ مکرمہ میں جاری 24 گھنٹے کے کرفیو میں کوئی رعایت نہیں برتی جا رہی ۔

وزارت داخلہ کی جانب سے گزشتہ روز کی نیوز کانفرنس میں بتایا گیا ہے کہ مملکت میں کورونا وائرس کے مریضوں کی گنتی میں اضافہ ہو رہا ہے، اسی وجہ سے کاروباری و تجارتی سرگرمیوں پر عائد پابندیوں کی مُدت میں توسیع کی جا رہی ہے۔

سرکاری ملازمین گھروں سے ہی اپنی دفتری ذمہ داریاں انجام دیں گے۔ وزارت داخلہ کے مطابق تمام ٹرانسپورٹ سروسز بند رہیں گی، جن میں ٹرین، بس اور ٹیکسی سروس شامل ہیں، جبکہ بین الاقوامی اور اندرون ملک پروازیں بھی فوری طور پر شروع کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔ البتہ تارکین وطن کی واپسی کے لیے آنے والی خصوصی پروازوں کو اُترنے کی اجازت دی جا رہی ہے۔
وزارت داخلہ نے مزید بتایا کہ مکہ مکرمہ میں حالیہ دنوں 24 گھنٹے کے لاک ڈاؤن کے باوجود کورونا کے سینکڑوں کیس رپورٹ ہوئے ہیں، اسی وجہ سے مکہ مکرمہ میں نافذ کرفیو میں کوئی نرمی نہیں کی جا رہی ہے۔ رمضان المبارک کے دوران ملک کے دیگر علاقوں میں نافذ کرفیو میں صبح نو بجے سے شام پانچ بجے تک کی نرمی دی گئی ہے۔ اس دوران لوگ خریداری کر سکتے ہیں اور اپنے اہم کام نمٹا سکتے ہیں۔