نوکریوں سے نکالے جانے وا لے افراد کو ا مداد پہنچانے کا نظام بنانے کی ضرورت ہے

ایف پی سی سی آئی بزنس مین پینل کے سینئیر وائس چئیرمین میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ عوام کو خریداری پر راغب کرنے کیلئے شرح سود میں کمی ،سیلز ٹیکس کو سترہ فیصد سے پانچ فیصد کرنے اور عالمی منڈی میںتیل کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ عوام کو منتقل کرنا ضروری ہے ۔پیر کویہاں جاری بیان میں انہوںنے کہاہے کہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباروں کو بلا سود قرضے دئیے جائے ۔

طویل لاک ڈاون نے صنعتکاروں اور چھوٹے و درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کومتاثرکیا ہے مگر ان حالات میں بھی کے الیکٹرک نے اضافی بل بھیج دئیے ہیں جن کی ادا ئیگی فی الوقت ناممکن ہے۔ حکومت فوری مداخلت کر کے ان بلوں کو واپس کروائے ۔ انہوں نے کہاکہ زرعی پیداوار میں اضافہ کیلئے اقدامات، غریب طبقہ کو مدد دینے کے انتظامات کو مزید بہتر اور حال ہی میں نوکریوں سے نکالے جانے وا لے افراد کے کوائف اکھٹے کر کے انھیں ا مداد پہنچانے کا نظام بنانے کی ضرورت ہے۔ انھوں نے کہا کہ کاروباری برادری کو تمام ریفنڈز فوری طور پر ادا کئے جائے اور ایف بی آر کو قابل عمل اہداف دئیے جائیں جنھیں پورا کرنا ممکن ہو ۔