سعودی عرب میں کورونا کے 1344نئے کیسز سامنے آگئے، مزید7مریض جاں بحق

سعودی عرب میں کورونا کے 1344نئے کیسز سامنے آگئے، مزید 7مریض جاں بحق، تفصیلات کے مطابق سعدی عرب میں کورونا کے 1344نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مملکت میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 24ہزار97ہوگئی ہے۔ ملکے میں اب تک 169مریض جان کی بازی ہارچکے ہیں جبکہ آج مزید 392مریض صحتیاب ہوکر گھروں کو چلے گئے ہیں جس کے بعد اب تک صحتیاب افراد کی تعداد 3555تک پہنچ گئی ہے۔
سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ کرونا وبا کے خطرات میں کمی کے بعد جمعرات سے القطیف گورنری میں شہریوں کو آمد ورفت کی اجازت دی گئی ہے۔سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی نے وزارت داخلہ کے ایک ذمہ دار ذریعے کے حوالے سے بتایا کہ انسداد کرونا کی حکومتی مہم اور وزارت صحت کی طرف سے فراہم کردہ ہدایات کے بعد جمعرات سات رمضان المبارک سے القطیف گورنری میں آمد ورفت کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

فیصلے کے تحت شہریوں کو صبح نو بجے سے شام پانچ بجے تک القطیف میں آمد ورفت کی اجازت ہوگی۔ شہریوں کی نقل وحرکت کی اجازت کے ساتھ جن سرگرمیوں کو کرونا کے دوران جاری رکھنے کی ہدایت کی گئی ہے وہ بدستور جاری رہیں گی۔خیال رہے کہ کرونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر سعودی حکومت نے 8 مارچ کو القطیف گورنری میں باہر سے آمد ورفت پرپابندی عاید کردی تھی۔
القطیف سعودی عرب کا پہلا شہر ہے جہاں پر ایران سے لوٹنے والے متعدد افراد میں کرونا کی تصدیق کی گئی تھی۔ دوسری جانب امام کعبہ عبدالرحمان شیخ السدیس کا کہنا ہے کہ خانہ کعبہ اور مسجد نبوی کو جلد زائرین کے لیے کھول دیا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کا جلد خاتمہ ہو جائے گا۔مساجد کی رونقیں ایک بار پھر بحال ہوں گی۔ایک بار پھر سے حج،عمرہ زائرین سے مساجد کی رونقیں بحال ہوں گی۔
امام کعبہ نے جلد ہی سعودی عرب سے کورونا وائرس ختم کرنے کی خوشخبری سنائی ہے۔انہوں نے کہا کہ جلد ہی کورونا وائرس کا خاتمہ ہو گا جس کے بعد دونوں مقدس مقامات کو کھول دیا جائے گا۔جہاں لوگوں کو نمازوں کی ادائیگی کی اجازت ہو گی۔لوگ طواف کعبہ کریں گے،جبکہ عمرہ زائرین سے خانہ کعبہ اور مسجد نبوی جلد ہی آباد ہوں گے۔