ماہ مئی کے پہلے ہفتے میں پاکستان اسٹاک مارکیٹ مندی کی لپیٹ میں رہی

ماہ مئی کے پہلے ہفتے میں پاکستان اسٹاک مارکیٹ مندی کی لپیٹ میں رہی ،کے ایس ای100انڈیکس800پوائنٹس گھٹ گیا جس کی وجہ سے انڈیکس 34ہزار کی نفسیاتی حد سے گر گیا اور33ہزار پوائنٹس کی کم ترین سطح پر بند ہوا ،مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 70ارب روپے بھی ڈوب گئے جبکہ51.67فیصد حصص کی قیمتیں بھی گر گئیں ۔
پاکستان اسٹاک مارکیٹ گذشتہ ہفتی4دن مندی کی زد میں رہی اس دوران کے ایس ای100انڈیکس 920.06پوائنٹس لوز کر گیا جبکہ 1دن کی تیزی سے انڈیکس نے صرف76.11پوائنٹس ہی ریکور کئے اس طرح مارکیٹ میں مجموعی طور پر مندی کے اثرات غالب رہے ۔اسٹاک ماہرین کے مطابق مارکیٹ میں مندی کی وجہ چین اور امریکہ کے درمیان کشیدگی کے ردعمل میں خطے کی مارکیٹوں پراثر انداز ہونیوالی مندی ہے جبکہ خطے کی اسٹاک مارکیٹوں کی خراب صورتحال کے پیش نظر منافع کی خاطر فروخت کے غیر معمولی دبائوکی وجہ بھی مارکیٹ کی تنزلی کا سبب بن رہی ہے ۔

ماہرین کے مطابق کورونا کی وجہ سے معاشی بندش کے نتیجے میں مارکیٹ میں فی الوقت بہتری کے آثار نہیں جس کی وجہ سے آئندہ دنوں میں مارکیٹ مزید گراوٹ کا شکار ہو سکتی ہے ۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ کاروباری ہفتے کے دوران ایس ای100انڈیکس میں843.95پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے انڈیکس34111.64پوائنٹس سے کم ہو کر33267.69پوائنٹس ہو گیااسی طرح462.12پوائنٹس کی کمی سے کے ایس ای 30انڈیکس 15081.82پوائنٹس سے کم ہو کر14619.70پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئرزانڈیکس 23937.61پوائنٹس سے گھٹ کر23682.18پوائنٹس پر آگیا ۔
کاروباری مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں70ارب94کروڑ23لاکھ20ہزار830روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم63کھرب76ارب71کروڑ72لاکھ94ہزار445روپے سے کم ہو کر63کھرب 5ارب77کروڑ49لاکھ73ہزار615روپے رہ گیا ۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں رواں کاروباری ہفتے ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای100انڈیکس ایک موقع پر34382.25پوائنٹس کی بلند سطح کو چھو گیا تھا تاہم مندی کے اثرات غالب آنے سے انڈیکس ایک موقع پر33159.08پوائنٹس کی کم سطح پر بھی دیکھا گیا ۔
پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے زیادہ سے زیادہ9ارب روپے مالیت کی26کروڑ 13ہزار25ہزارحصص کے سودے ہوئے جبکہ کم سے کم3ارب روپے مالیت کی8کروڑ80لاکھ18ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے۔گذشتہ کاروباری ہفتے کے دوران پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں مجموعی طور پر1705کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سی708کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ،881میں کمی اور116کمپنیوں کی قیمتوں میں استحکام رہا ۔
کاروبار کے لحاظ سے میپل لیف ،ہیسکول پیٹرول،یونٹی فوڈز لمیٹڈ ،ٹی آر جی پاک لمیٹڈ ،کے الیکٹرک لمیٹڈ پاک الیکٹرون ،پاک پیٹرولیم ،آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ ،پائینر سیمنٹ ،سمٹ بینک ،فوجی سیمنٹ ،پاک الیکٹرون ،ہم نیٹ ورک ،ورلڈ کال ٹیلی کام ،پاک انٹر نیشنل بلک ،ایز گارڈ نائن ،کریسینٹ ٹیکسٹائل ، حبیب بینک ،سوئی نادرن گیس اور ڈیسکون آکس چیم سر فہرست رہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں