بغیر انکوائری 262پائلٹس کو گراؤنڈکرنے پر جگ ہنسائی ہوئی، شاہد خاقان عباسی

مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ بغیر انکوائری 262پائلٹس کو گراؤنڈکرنے پر جگ ہنسائی ہوئی، پی آئی اے کو جاری 140پائلٹس کی لسٹ میں26پائلٹس کام نہیں کررہے ، 6پائلٹ ریٹائرڈ، 2حویلیاں حادثے میں شہید، جبکہ 29کا ڈیٹا درست نہیں، 18پائلٹس کو ابھی لائسنس ہی نہیں ملے، 43پائلٹس کومشکوک کہنے کہ وجہ وہ امتحان کے روز ڈیوٹی پر تھے، پائلٹس کو شوکاز جاری کرکے صفائی کا موقع دیا جائے۔
انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہرکسی کیلئے انصاف کے کچھ تقاضے ہیں، لائسنس اگر معطل یا منسوخ کرنا ہے تو اس کا قانون میں طریقہ کار موجود ہے۔رولز342بڑا واضح ہے کہ کس طرح پائلٹ کے لائسنس کو معطل یا منسوخ کیا جائے گا۔

مسئلہ یہ ہے کہ ہم نے کوئی ایکشن لینے سے پہلے اعلان کردیا کہ 262پائلٹس کے لائسنس جعلی ہیں،اس مسئلے کو پوری دنیا نے پکڑ لیا۔

حیرت کی بات یہ ہے کہ ابھی تک سی اے اے کی طرف سے کوئی بیان سامنے نہیں آیا جبکہ سی اے اے ہی لائسنس دینے کیلئے امتحان کا انعقاد کرتا ہے۔ایوی ایشن ڈویژن نے ان پائلٹس کو مشکوک کیسز کہا اورایئرلائن کی جانب سے فوری تمام پائلٹس کو گراؤنڈ کردیا گیا ہے۔ یہ بھی ایوی ایشن نے کہا کہ ان افراد کیخلاف کاروائی کی جائے گی، لیکن ابھی کاروائی شروع ہی نہیں ہوئی، ان افراد کو ابھی صفائی کا موقع دیاجانا ہے،انصاف کے تقاضے یہ کہتے ہیں کہ پہلے ملزم کو بتائیں ان پر الزام کیا ہے؟ پھر کوئی کاروائی کرسکتے ہیں۔
لیکن یہاں پر پائلٹس کوسزا دے دی گئی، گراؤنڈ کردیا، نام اور فہرستیں بنا دی گئیں۔انہوں نے کہا کہ 50سے زیادہ پائلٹس ملک سے باہر اور مجھ سے رابطے میں ہیں کہ ہمارا کیا بنے گا؟ وہ پریشان ہیں، پاکستان کی ساکھ خطرے میں ہے۔ پی آئی اے کو140پائلٹس کی لسٹ دی گئی، ان پائلٹس میں 26پائلٹس پی آئی اے میں کام نہیں کررہے۔2پائلٹس سانحہ حویلیاں میں شہید ہوگئے، ان کا نام بھی لسٹ میں شامل کیا گیا ہے۔
جبکہ6پائلٹس پی آئی اے سے ریٹائرڈ ہوچکے ہیں۔اسی طرح 29پائلٹس کا ڈیٹا ہی درست نہیں ہے۔10پائلٹس عدالت میں گئے ہوئے ہیں۔7پائلٹس کے معیار کا علم نہیں ہے۔18پائلٹس کو ابھی اے ٹی پی لائسنس جاری نہیں ہوا۔باقی جو 43پائلٹس ہیں، ان کو اس لیے مشکوک کہا گیا کہ جس دن انہوں نے امتحان دیا وہ اس دن ڈیوٹی پر موجود تھے۔ یعنی انہوں نے صبح یا شام کو ڈیوٹی کی اور امتحان بھی دیا ہوگا۔اب کرنے کی ضرورت یہ ہے کہ ان 262پائلٹس کو سی اے اے کو شوکاز نوٹس جاری کرنا چاہیے، بورڈ آف انکوائری بنا کران کو صفائی پیش کرنے کا موقع دیاجانا چاہیے۔پھررولز کے مطابق 30دنوں میں کاروائی کی جائے۔جس نے امتحان میں چیٹنگ کی ہے اس کو فوری ایئرلائن سے نکال دینا چاہیے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں