الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس میں اہم پیشرفت

الیکشن کمیشن میں پی ٹی آئی کے فارن فنڈنگ کیس میں اہم پیشرفت ہوئی ہے، اسکروٹنی کمیٹی نے اپنی رپورٹ الیکشن کمیشن کو پیش کردی، الیکشن کمیشن نے کمیٹی کو جلدحتمی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کی اسکروٹنی کمیٹی نے پیش رفت رپورٹ الیکشن کمیشن میں جمع کروا دی ہے۔
الیکشن کمیشن نے پیشرفت رپورٹ پر اظہار ا طمینان کرتے ہوئے کمیٹی کو جلدحتمی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ دوسری جانب تحریک انصاف کے سابق رہنما اکبر ایس بابر نے کہاہے کہ فارن فنڈنگ کیس میں سکروٹنی کمیٹی کو کسی صورت مزید وقت دینے کی حمایت نہیں کریں گے۔ الیکشن کمیشن میں سکروٹنی کمیٹی کے ستر سے زائد اجلاس ہوچکے ہیں،،تحریک انصاف نے آج تک بیرون ممالک میں بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات جمع نہیں کرائیں،تحریک انصاف نے بیرون ممالک میں چھ بینک اکاؤنٹس تسلیم کیے لیکن تفصیلات جمع نہیں کرائیں،17 اگست کو سکروٹنی کمیٹی نے اپنی رپورٹ الیکشن کمیشن میں جمع کرانی ہے،تحریک انصاف کے بینک اکاؤنٹس کی سکروٹنی ابھی ابتدائی مرحلے میں ہے۔
سکروٹنی کمیٹی نے بیرون ممالک سے تحریک انصاف کے بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات ابھی تک نہیں منگوائیں۔ تحریک انصاف کے اکاؤنٹس کی کوئی تفصیلات شیئر نہیں کی گئیں،عمران خان احتساب کے عمل میں سنجیدہ ہوتے تو پہلے اپنا اور پارٹی کا احتساب کرتے،مدینہ کی ریاست میں صرف مخالفین کا احتساب کیا جا رہا بھی ہے، سپریم کورٹ بھی ملک میں جاری جعلی احتساب کی قلعی کھول چکی ہے،ملک نے ترقی کرنی ہے تو ایماندار لیڈرشپ ضروری ہے جو اپنے آپ سے احتساب کا آغاز کرے،کوشش ہے سکروٹنی کمیٹی 17 اگست تک الیکشن کمیشن میں رپورٹ جمع کرائے تاکہ حقائق قوم کے سامنے آئیں،ہم اس کیس کو آخری حد تک لڑیں گے چاہے اس کیلئے سپریم کورٹ جانا پڑے،۔
انہوںنے کہاکہ ہمارا مطالبہ ہے سکروٹنی کمیٹی نے جتنا بھی کام کیا ہے 17 اگست تک رپورٹ الیکشن کمیشن میں جمع کرائے،فارن فنڈنگ کیس میں سکروٹنی کمیٹی کو کسی صورت مزید وقت دینے کی حمایت نہیں کریں گے۔