سی ڈی اے حکام نے قائد اعظم کا پورٹریٹ 17سال تک سٹور میں رکھ کر تباہ کردیا

اسلام آباد ( روزنامہ نیا وقت ) سی ڈی اے حکام نے دو کروڑ روپے مالےت کا قائداعظم کاپورٹرےٹ17سال تک سٹور روم مےں رکھ کر تباہ کردےا ۔ بانی پاکستان کا 8ہزار مربع فٹ کا پورٹرےٹ دوبئی مےںمقےم پاکستانی لےاقت علی خان نے تےارکےا تھا جسے پروےز مشرف کی ہداےت پر 2001مےں چارٹر طےارے کے زرےعے پاکستان لاےا گےا تھا۔سی ڈی اے حکام نے آرٹسٹ کے فن کی قدر کی نہ اس پورٹرےٹ پر اٹھنے والے اخراجات کا خےال کےا، ڈائرےکٹر جنرل انوائرمنٹ سمےت دےگر افسران نے پورٹرےٹ کے متعدد حصے اپنے گھروں کی زےنت بنالےے ہےں۔ذرائع کے مطابق سی ڈی اے کے شعبہ انوائرمنٹ مےں تعےنات ڈائرےکٹرجنرل انوائرمنٹ سمےت دےگر افسران نے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کا اےک کروڑوں روپے مالےت کا اےک ناےاب پورٹرےٹ سترہ سال سے انوائرمنٹ ڈائرےکٹورےٹ اےف نائن پارک کے گودام مےں پڑے پڑے تباہ ہوگےا ہے تاہم اسے کہےں بھی نصب کرنے کی زحمت بھی گوارہ نہےں کی گئی ہے قائداعظم کا ےہ پورٹرےٹ مشہور آرٹسٹ لےاقت علی خان نے 2001مےں چالےس ہزار درہم کی لاگت سے دوبئی مےں تےار کی جسے پروےز مشرف نے دوبئی سے اےک چارٹر طےارے کے زرےعے پاکستان منگواےا تھا 2001مےں اےوان صدر نے اس پورٹرےٹ کو پاک چائےنہ فرےنڈشپ سےنٹر کی سائےٹ پر نصب کرنے کی غرض سے وفاقی ترقےاتی ادارے ( سی ڈی اے )کے سپرد کےا جس کی تنصےب کے لےے سی ڈی اے نے 25لاکھ روپے کا بل بناےا تاہم اس قےمتی پوٹرےٹ کو کہےں بھی نصب کےا نہ تصوےر کو محفوظ بنانے کی عملی کوشش کی گئی سترہ سال سے سی ڈی اے کے اےف نائن دفتر مےں پڑی آٹھ ہزار مربع فٹ کی قائد اعظم کی اس تصوےر کے متعدد حصے ڈائرےکٹرجنرل انوائرمنٹ سمےت دےگر افسران نے اپنے گھروں مےں چھپا لےے ہےں بانی پاکستان کا کرڑوں روپے مالےت کاےہ پورٹرےٹ اےف نائن پارک کے اےک گودام مےں پڑے اپنی قوم کی بے اعتنائی اور افسران کی کرپشن کا داستان سنارہا ہے ۔ مےئر اسلام آباد جو اپنی قےادت کی مہربانی سے اہم عہدے پر فائز تو ہوگئے ہےں لےکن انہےں بھی قائد اعظم کے پورٹرےٹ کے ساتھ روا رکھے جانے والے اس سلوک پر کسی سے پوچھنے کی فرصت نہےں ہے ۔پورٹرےٹ کو تخلےق کرنے الے مصور و آرٹسٹ لےاقت علی خان نے نوائے وقت کے استفسار پر بتاےا کہ وہ کوہاٹ کے رہنے والے ہےں، انہوں نے 2000مےں قائد اعظم کا ےہ پورٹرےٹ دوبئی مےں بناےا تھا جو اس وقت کے صدر پروےز مشرف نے ذاتی دلچسپی لے کر پاکستان منگواےا تھا انہوں نے نوائے وقت کو بتاےا کہ مےں نے شےخ زےد کا 512مربع مےٹر کا پورٹرےٹ بھی بنا ےا جو اب بھی امارات مےں نصب ہے انہےں اس پورٹرےٹ کے بعد امارات کی شہرےت کی بھی پےشکش ہوئی تاہم انہوں نے شکرےہ کے ساتھ ےہ آفر مسترد کردی تھی کےونکہ مےں کوہاٹ مےں اپنے نوجوانوں کی تربےت کرنے کا خواہشمند تھا جو مےں اب بھی کررہاہوں انہوں نے بتاےا کہ اس پورٹرےٹ پر اٹھنے والے اخراجات انہوں نے نے اپنی جےب سے برداشت کےے تھے اور ےہ تصوےر مفت مےں گفٹ کی گئی تھی لےکن اس کا حشر دےکھ کر انہےں بے حد تکلےف ہوئی ہے، لےاقت علی خان نے کہا کہ سترہ سال سے سی ڈی اے نے بانی پاکستان کے پورٹرےٹ کو اپنے سٹورروم مےں دبارکھا ہے جو قائد اعظم محمد علی جناح کے ساتھ ہماری جذباتی وابستگی اور افسران کے روےوں کا ظاہر کرتا ہے انہوں نے وزےر اعظم مےاں نوازشرےف ، وزےر داخلہ چوہدری نثار علی خان اور مےئر اسلام آباد کو معاملے کا نوٹس لےنے ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کرنے اور پورٹرےٹ کو نصب کرنے کا مطالبہ کےا ہے ۔