یونیورسٹی نورین لغاری کے کسی عمل کی ذمہ دار نہیں :ڈاکٹر نوشاد

حیدر آباد (ٹیسکو نیوز ) جامعہ میں کسی کی ذہن سازی کے ثبوت نہیں ملے ، ایسا ممکن ہے کہ اسے سوشل میڈیا پر کسی نے ایسا کرنے کی ترغیب دی ہو :وی سی لیاقت میڈیکل کالج
وائس چانسلر لیاقت میڈیکل کالج ڈاکٹر نوشاد کہتے ہیں لیاقت یونیورسٹی نورین لغاری کے کسی عمل کی ذمہ دار نہیں ، جامعہ میں طلباء کی ذہن سازی کے کوئی شواہد نہیں ملے ، ہوسکتا ہے سوشل میڈیا پر ترغیب دی گئی ہو ، کیس میں مکمل تعاون کررہے ہیں ۔ لاہور کومبنگ آپریشن میں گرفتار ہونیوالی میڈیکل کی طالبہ نورین لغاری کے کالج کے وائس چانسلر بھی معاملے پر بول پڑے ۔ حیدر آباد میں میڈیا سے گفتگو میں وائس چانسلر لیاقت میڈیکل کالج ڈاکٹر نوشاد نے بتایا نورین لغاری کی گرفتاری کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں نے رابطہ کیا ، نورین مذہبی ذہن رکھنے والی طالبہ تھی ، لیاقت یونیورسٹی اس کے کسی عمل کی ذمہ دار نہیں ۔ ڈاکٹر نوشاد نے کہا ان کی جامعہ میں طلباء کی ذہن سازی کے کوئی شواہد نہیں ملے ، ہوسکتا ہے نورین کو سوشل میڈیا پر ترغیب دی گئی ہو ۔ وائس چانسلر لیاقت یونیورسٹی نے کہا قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھہ مکمل تعاون کر رہے ہیں ، اگر کوئی غیر معمولی سرگرمیاں نظر آئیں تو ایجنسیوں کو آگاہ کیا جائے گا ۔ نورین لغاری 10 فروری کو حیدر آباد سے لاپتہ ہوئی تھی اور دو دن پہلے لاہور میں سیکورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران گرفتار ہوئی جس کے بعد سنسنی خیز انکشافات کا سلسلہ جاری ہے