لاڑکانہ :انٹرمیڈیٹ کے امتحانات میں سرعام نقل کا سلسلہ جاری

لاڑکانہ (ٹیسکو نیوز) ایس ایم ایس ، کتابوں اور گائیڈوں کی مدد سے دھڑلے سے نقل چلتی رہی ، سندھی کا حل شدہ پرچہ فوٹو سٹیٹ کی دکانوں پر 100 روپے میں فروخت ہوتا رہا . انٹرمیڈیٹ کا امتحان شروع ہوتے ہی سندھ میں نقل کا میدان جم گیا ، لاڑکانہ میں سندھی زبان بولنے والے طلبا نے نقل چلا کر اپنی مادر زبان سے محبت کا حق ادا کیا ۔ میر پور ماتھیلو میں طلبا نے گزشتہ روز نقل کرنےوالی طالبات کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے انگریزی کے پرچے کا بائیکاٹ کیا اور مستقبل کی پروا کئے بغیر پرچہ دیئے بغیر چلتے بنے ۔ جدید زمانے میں موبائل نے نقلچی طالب علموں کے وارے نیارے کر دیئے ۔ کسی طالبعلم نے بذریعہ ایس ایم ایس جواب حاصل کیا اور کہیں کتابیں ، گائیڈز اور پھرے چلتے رہے ۔ طالبعلموں نے خوب دھڑلے سے نقل چلائی ، کوئی پوچھنے والا نہ تھا ۔ سکھر.بورڈ کے زیر اہتمام بارہویں انگلش کے پرچے میں طلبا نے کتابوں ، گائیڈز اور موبائل فون کا بے دریغ استعمال کیا ۔ انتظامیہ آنکھوں پر پٹی باندھے خاموش تماشائی بنی رہی ۔ لاڑکانہ میں سندھی زبان بولنے والے طلبا نے سندھی کے پرچے میں نقل چلا کر اپنی مادری زبان سے محبت کا پورا پورا حق ادا کیا ۔ سندھی کا حل شدہ پرچہ فوٹو سٹیٹ کی دکانوں پر 100 روپے کے عوض کھلے عام بکتا رہا ۔ دوسری طرف چوری اور سینہ زوری کا سین بھی دیکھنے میں آیا ۔ میرپور ماتھیلو میں طلبا نے نقل کرنے والی طالبات کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے انگریزی پرچے کا بائیکاٹ کیا اور اپنا ہی مستقبل داؤ پر لگا کر پرچہ دیئے بغیر چلتے بنے ۔ گزشتہ روز پولیس نے نقل کرنے کے الزام میں دو طالبات کو گرفتار کیا تھا ۔ گزشتہ کئی برس سے سندھ میں میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانات مذاق بن کر رہ گئے ، میڈیا کی جانب سے نشاندہی کے باوجود محکمہ تعلیم ، متعلقہ بورڈز ، انتظامیہ اور حکومتی کارپرداز نقل کی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کرنے میں ناکام رہے ہیں ۔