شہبازشریف کا وفاقی حکومت کے قرض میں ہوشربا اضافے پر تشویش کا اظہار

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے وفاقی حکومت کے قرض میں ہوشربا اضافے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ رواں مالی (فسکل) سال کے صرف 7 ماہ میں وفاقی حکومت کے قرض میں 1.210 ٹریلین سے 32.997 ٹریلین کا اضافہ معاشی قیامت ہے ۔ ایک بیان میں انہوںنے کہاکہ موجودہ حکومت کا معاشی تباہی کا ایجنڈا ملک وقوم کے لئے خوفناک پیغام ہے۔انہوںنے کہاکہ طویل اور قلیل مدتی ڈومیسٹک قرض میں 10 فیصد اضافہ معاشی تباہی اور بربادی کا اعلان ہے ۔ انہوںنے کہاکہ قلیل مدتی غیرملکی قرض 126.9 ارب سے 641.9 ارب پر پہنچنا غلط معاشی حکمت عملی کا ثبوت ہے ۔ انہوںنے کہاکہ حکومت دو دھاری تلوار سے پاکستان کی معیشت کی شہہ رگ کاٹ رہی ہے ۔

انہوںنے کہاکہ سود کی انتہائی زیادہ شرح سے کاروباری پہیہ رٴْک چکا ہے تو دوسری جانب پاکستان پر ادائیگیوں کا بوجھ دن بدن بڑھ رہا ہے ۔

انہوںنے کہاکہ اس صورتحال میں صرف اللہ تعالی سے رحم کی دعا ہی کی جاسکتی ہے ،سٹاک مارکیٹ کا ایک دن میں 6 فیصد سے زیادہ گرنے کا مطلب نہ سمجھا گیا تو ناقابل تلافی نقصان ہوگا ۔ انہوںنے کہاکہ کورونا وائرس، عالمی معاشی صورتحال اور پاکستان کے اندر سوئی حکومت ملک کے لئے معاشی تباہی کا سونامی لائے گی ۔ انہوںنے کہاکہ معاشی جہاز آٹو پائلٹ پر ہچکولے کھارہا ہے، کسی بھی وقت گرگیا تو کچھ نہیں بچے گا۔انہوںنے کہاکہ حالات کی سنگینی پر ہوش کے ناخن لینے کے بجائے حکومت آٹا، چینی ، پٹرول، دوائی اور ڈالر پر پیسہ کمانے میں مصروف ہے ۔ انہوںنے کہاکہ حکمرانوں کی معیشت دن بدن بہتر اور ملک وقوم کی معیشت ہر روز تباہ وبرباد ہورہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ معیشت کے لئے بڑھتے خطرات پاکستان کی سلامتی کے لئے خطرہ ہیں۔