ایران سے آنے والے 14 زائرین کے کرونا ہیلتھ سرٹیفکیٹ جعلی نکلے

چین کے شہر وہان سے شروع ہونے والے کرونا نے دنیا بھر میں تباہی مچائی ہوئی ہے۔تفصیلات کے مطابق ابھی تک کرونا وائرس سے متاثرہ لوگوں کی تعداد 1 لاکھ 20 ہزار سے زیادہ ہو گئی ہے جبکہ اس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 4 ہزار سے زیادہ ہو گئی ہے۔پاکستان میں بھی ابھی تک 20 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے جس کے بعد پاکستان میں داخل ہونے والے ہر شخص کا طبی معائنہ کیا جا رہا ہے۔اسی دوران اطلاعات موصول ہوئی ہیں جس کے بعد ایران سے آنے والے 14 زائرین کے کرونا ہیلتھ سرٹیفکیٹ جعلی نکلے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ سرٹیفکیٹ میں تاریخ 30 فروری درج تھی جبکہ مہینہ 29 کا تھا، سیکیورٹی فورسز نے آنے والے افراد کو کانک کے مقام پر روک لیاگیا ہے ۔

ایران کی جانب سے زائرین کو جعلی سرٹیفکیٹ جاری کئے گئے تھے جس کے بعد انہو ں نے پاکستان میں د اخل ہونے کی کوشش کی تھی۔

لیکن پاکستان فورسز نے ان کی اس کوشش کو ناکام بناتے ہوئے زائرین کو روک دیا گیا تھا ۔ واضح رہے کہ پاکستان میں بھی کرونا وائرس کے مریضوں کی تصدیق ہو گئی ہے جس کے بعد حکومت کی جانب سے ہر قسم کی احتیاطی تدابیر کی جا رہی ہیں ۔پاکستان میں ابھی تک 20 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے جس کے بعد سکولوں میں چھٹیوں کا اعلان کر دیا گیا ہے اور ساتھ ہی ساتھ کوشش کی جا رہی ہے کہ کسی بھی قسم کے عوامی اجتماع سے گریز کیا جائے کیونکہ اس سے کرونا وائرس پھیلنے کا خطرہ ہو سکتا ہے۔دوسری جانب حکومتی ارکان کی جانب سے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے کہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکا جائے ۔دنیا بھر میں تباہی مچانے والے کرونا وائرس پر قابو پانے کی کوشش کی جا رہی ہے لیکن ا بھی تک اس میں کسی صورت کی کامیانی سامنے نہیں آئی۔ اسی دوران اطلاعات موصول ہوئی ہیں جس کے بعد ایران سے آنے والے 14 زائرین کے کرونا ہیلتھ سرٹیفکیٹ جعلی نکلے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ سرٹیفکیٹ میں تاریخ 30 فروری درج تھی جبکہ مہینہ 29 کا تھا، سیکیورٹی فورسز نے آنے والے افراد کو کانک کے مقام پر روک لیاگیا ہے۔