پنجاب میں منافع خور بے لگام ، گھی 39 اور آئل 27 روپے لیٹر مہنگا ہو گیا

پنجاب میں منافع خور بے لگام ، گھی 39 اور آئل 27 روپے لیٹر مہنگا ہو گیا ۔ تفصیلات کے مطابق سندھ اور پنجاب حکومت میں چینی دو اورآٹے کی قیمت میں چار روپے فی کلو اضافہ ہو گیا ہے۔ مہنگائی کا طوفان ابھی تھما نہیں تھا کہ یوٹیلیٹی سٹورز پر گھی 39اور آئل 27 روپے فی لیٹر مہنگا کر دیا گیا ہے جبکہ آٹے کے نرخ بھی بڑھا دیئے گئے ہیں۔
یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق گھی اور آئل کی قیمتوں میں 27روپے سے 39 روپے تک اضافے کے بعد گھی241 اور آئل 239روپے فی لیٹر پر فراہم کیا جا رہا ہے۔وزیراعظم عمران خان کے غریبوں کو ریلیف فراہم کرنے بعدآٹا، گھی اور آئل کی قیمتوں میں اضافے کو تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان منافع خوروں کیخلاف کارروائی کریں۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ایک طرف کرونا وائرس کے ڈر نے شہریوں کو خوف میں مبتلا کر دیا اور جبکہ دوسری جانب منافع خور افراد اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوام کو پریشان کررہے ہیں۔ شہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت گراں فروشی کیخلاف سخت سے سخت کارروائی کرے تاہم شہری اس سنجیدہ سے گزر سکیں۔ واضح رہے گزشتہ ماہ پاکستان شماریات بیورو نے منہگائی کے حوالے سے ہفتہ وار رپورٹ جاری کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ 13 اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ اور 13 کی قیمتوں میں کمی ہوئی، ایل پی جی، پیاز، گھی اور فروٹ مہنگا ہوا، جبکہ چینی، مرغی، لہسن کی قیمتیں کم ہوئیں۔
ادارہ پاکستان شماریات بیورو کی رپورٹ کے مطابق ایک ہفتے میں 13 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔ تاہم مہنگائی کا یہ سلسلہ نہ تھم سکا اور ایک بار پھر سے یوٹیلیٹی سٹورز پر گھی ، آٹے اور آئل کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا گیا ہے۔