ڈچ وزیراعظم کا کورونا وائرس چیلنج میں ناکامی پر وزیر صحت کے مستعفی ہونے کے بعد بڑا اقدام

ہالینڈ میں وزیر صحت کورونا وائرس چیلنج میں ناکامی پر مستفعی ہو گئے۔ وزیراعظم مارک روٹے نے مخالفت کر ایک طرف رکھتے ہوئے شعبہ صحت میں تجربہ کار اپوزیشن لیڈر کو نیا وزیر صحت بنا دیا۔تفصیلات کے مطابق ہالینڈ کے وزیر اعظم مارک روٹے نے ایک اپوزیشن رکن پارلیمنٹ کو ملک کا نیا وزیر صحت مقرر کر دیا ہے تاکہ کورونا وائرس سے لڑنے میں ان کے تجربے سے مستفید ہوا جا سکے۔
لیبر پارٹی کے سابق سکریٹری برائے صحت مارٹن وین رجن کو عارضی بنیاد پر 3 ماہ کے لئے وزیر برائے طبی نگہداشت مقرر کیا گیا ہے۔وزیراعظم مارک روٹے نے اس حوالے سے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انھیں صحت کے شعبے میں کئی سال کا تجربہ ہے اور وہ اس وزارت کو اچھی طرح جانتے ہیں۔

قبل ازیں وزیر صحت نے بدھ کے روز پارلیمنٹ میں ہونے والی بحث کے دوران کورونا وائرس سے لڑنے میں ناکامی قبول کرتے ہوئے استعفیٰ دیا تھا۔
اس فیصلے کو ہالینڈ کی تمام سیاسی جماعتوں میں وسیع پیمانے پر پذیرائی ملی ہے۔واضح رہے کہ کورونا وائرس نے 170ممالک کو اپنی لپٹ میں لے لیا ہے، عالمی سطح پر ہلاکتوں کی تعداد 8790 تک پہنچ گئی ہے، متاثرہ افراد کی تعداد 2 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے، اب تک مجموعی طور پر 84314 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں، دو روز قبل شائع رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ ہلاکتیں اٹلی میں ریکارڈ کی گئیں جہاں پر وائرس کا شکار مزید 475 افراد دم توڑ گئے، وائرس نے ایران میں مزید 147، اسپین میں 90، برطانیہ میں 33، ہالینڈ میں 15، انڈونیشیا میں 12، چین میں 11 اور امریکہ میں 8 زندگیوں کو نگل لیا، دنیا بھر میں ایک دن کے دوران مجموعی طور پر 823 اموات ہوئیں اور 15323نئے کیسز رپورٹ ہوئے۔
دوسری جانب سویڈن، ہالینڈ اور سوئٹزرلینڈ نے پاکستان میں ویزہ آپریشنز معطل کر دیئے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کے پیش نظر ویزہ درخواستیں وصول کرنا بند کر دی گئیں،تینوں ممالک کے سفارتخانوں نے تمام ویزہ اپوائنٹس منسوخ کر دیں ،نئی اپوائنٹ منٹس کیلئے نئی تاریخ کا اعلان صورتحال بہتر ہونے پر ہو گا۔