وزیراعلیٰ پنجاب اورکابینہ ا کی ایک ماہ کی تنخواہ کورونا بچاﺅ فنڈز میں دینے کا اعلان

وزیراعلیٰ پنجاب نے اپنی اور اپنے کابینہ اراکین کی ایک ماہ کی تنخواہ کورونا بچاﺅ فنڈز میں دینے کا اعلان کردیا ہے. لاہور میں صوبائی کابینہ کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو میں انہوں نے سب سے پہلے کورونا کا علاج کرنے کے دوران فوت ہونے والے ڈاکٹر اسامہ کو خراج تحسین پیش کیا.انہوں نے کہا کہ کابینہ نے محکمہ صحت کو جاری کیے گئے 11 ارب روپے کی منظوری دی جس میں پی ڈی ایم اے کو 2 ارب جبکہ ضلع حکومتوں کو 60 کروڑ روپے اور بلوچستان حکومت کو دیے جانے والے ایک ارب روپے کی توثیق شامل ہے.

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ محکمہ صحت کو کہا گیا ہے کہ ذاتی تحفظ کے آلات کی خریداری فوری طور پر مکمل کی جائے جبکہ 8 لیبارٹریز کو فعال کیا جائے، اس سلسلے میں 62 کروڑ روپے کے فنڈز فراہم کردیے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ صوبائی کابینہ میں غور کیا گیا کہ اس مرتبہ زاکوٰة کی کٹوتی جلد کردی جائے، اس سلسلے میں وفاقی کابینہ کو تجویز دی جائے گی.انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ تمام اضلاع میں بیت المال فنڈز ریلیز کیے جارہے ہیں سکولز کی تعطیلات سے متعلق انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے اور نجی اسکولز کی فیسز کے معاملے پر ایک کمیٹی بنائی ہے جو ایک ہفتے میں رپورٹ دے گی.پنجاب کے وزیراعلیٰ نے کہا کہ کابینہ نے صوبے میں 10ہزار ڈاکٹرز و پیرامیڈکس کی بھرتی کی منظوری دے دی ہے، اس میں ریٹائرڈ ڈاکٹر بھی شامل ہے بلدیاتی انتخابات سے متعلق انہوں نے کہا کہ ہم ایک آرڈیننس لارہے ہیں جس کے تحت ان انتخابات کو 9 ماہ کے لیے ملتوی کررہے ہیں.وزیراعلیٰ نے بتایا کہ انہوں نے اور ان کی کابینہ نے اپنی ایک ماہ کی تنخواہ کورونا بچاﺅ فنڈ کے لیے مختص کردی ہے خیال رہے کہ پنجاب میں کورونا وائرس سے پہلی ہلاکت سامنے آچکی ہے جبکہ صوبے میں متاثرہ افراد کی تعداد 265 تک جا پہنچی ہے.صوبے میں بڑھتے کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر پنجاب میں لاک ڈاﺅن کا اعلان کیا تھا جس کا آغاز آج سے ہوگیا اس لاک ڈاﺅن میں 14 روز کے لیے صوبے کے بازار، شاپنگ مالز، نجی و سرکاری ادارے، پبلک ٹرانسپورٹ، ریسٹورنٹس، پارکس، سیاحتی مقامات بند رہیں گے جبکہ ڈبل سواری پر بھہ پابندی ہوگی.