کورونا وائرس، بیرون ملک سے آئے پاکستانیوں کا پاکستان ایئرلائن پر فراڈ کرنے کا الزام

کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے جس کے بعد دنیا بھر میں موجود لوگوںنے اپنے اپنے ملک جانے کا فیصلہ کیا۔ اسی طرح کئی پاکستانیوں نے بھی واپس آنے کا فیصلہ کیا تھا جبکہ بہت سے لوگوںے واپس بیرون ملک جانے کا فیصلہ کیا تھا کیونکہ ان کے کاروبار کسی دوسرے ملک میں ہیں یا وہ وہاں نوکری کرتے ہیں۔
اسی سلسلے میں کچھ شہریوں نے اپنی مشکلات کااظہار کیا ہے۔ سیاست ڈاٹ پی کے کی جاری کردہ ویڈیو میں شہریوں کو سنا گیا ہےجس میں ان کی جانب سے شکایت کی گئی ہے کہ جب ہم نے آن لائن ٹکٹ خریدنا چاہی تو ہمیں کہا گیا کہ ہمیں ٹکٹ دفتر میں جا کر ملے گی، لیکن جب ہم دفتر گئے ہیں تو ہمیں کہا جاتا ہے کہ تمام ٹکٹس فروخت ہو گئے ہیں۔

شہریوں نےبتایا ہے کہ پی آئی اے حکام نے تمام ٹکٹس مختلف ایجنٹس کو فروخت کر دیئے ہیںاور اب وہ مہنگے داموں بیچ کر ہمیں لوٹ رہے ہیں۔
شہریوں کی جانب سے درخواست کی گئی ہےکہ حکومت ایسے لوگوں کے خلاف قانونی کارروائی کرے او ر ٹکٹوں کےسلسلے کو آن لائن کر دیا جائے، اس سے شہریوں کو سفر کرنے میں آسانی ہو گی۔ یاد رہےکہ پاکستان میں اب تک متاثری افراد کی تعداد1102 ہو گئی ہے جبکہ 8 افراد اس کا شکار ہو کر ہلاک ہو چکے ہیں۔حکومت کی جانب سے اسے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔
اسی سلسلے میں ملک کےچاروں صوبوں میں مکمل لاک ڈاؤن کر دیا گیا تھا جس پر عمل کیا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ حکومت کی جانب سے ملک بھر میں فوج تعینات کر دی گئی تھی تا کہ لوگو ں کو ان کے گھروں سے نکلنے سے روکا جا سکے۔ لیکن دوسری طرف بیرون ملک سے آئے ہوئے پاکستانیوں کو واپس جانے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جس کی مثال یہ ہے کہ شہریوں کو دفتربلا کر کہا جا رہا ہے کہ ٹکٹس ان کو ایجنٹ سے ملیں گی اور وہ مہنگے داموں ٹکٹس فروخت کر رہے ہیں۔