سندھ بھر میں کل سے دکانیں رات 8 بجے کے بجائے شام 5 بجے بند ہونگی۔ سندھ حکومت نے ہدایت جاری کردیں

سندھ بھر میں کل سے دکانیں رات 8 بجے کے بجائے شام 5 بجے بند ہونگی۔ ترجمان وزیراعلیٰ ہاؤس سندھ کے مطابق سندھ حکومت نے ہدایت جاری کی ہے کہ 28مارچ سے صوبے میں دکانیں رات 8 بجے کے بجائے شام 5 بجے بند کردی جائیں گی۔ وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے پولیس کو ہدایت کی ہے کہ لاک ڈاون کو مزید سخت کیا جائے۔
انہوں نے مزید کہا ہے کہ عوام کو ایک مرتبہ پھر ان کے اپنے بچوں، خاندان اور صوبے اور ملک کے عوام کی صحت کی خاطر لاک ڈائون پر عمل کرنے کی درخواست کرتا ہوں۔ وزیراعلی کے ترجمان کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاک ڈائون کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وزیر صحت ڈاکٹر عذرہ پیچوہو، چیف سیکرٹری ممتاز شاہ، ڈی جی رینجرزسندھ میجر جنرل عمر احمد بخاری، آئی جی پولیس مشتاق مہر، سیکرٹری داخلہ عثمان چاچڑ، کور فائیو کے برگیڈیئر سمیع نے شرکت کی ۔

اجلاس میں لاک ڈائون کی صورتحال پر جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ لاک ڈائون کو مزید موثر بنانا ہے، لوگ ابھی تک شہر میں گھوم رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے خوشی سے نہیں بلکہ تکلیف سے مساجد میں جماعت کو بہت محدود کروایا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ عوام کے صحت کے پیش نظر علماء کی مشاورت سے کیا،عوام کو لاک ڈائون اور حکومت کے فیصلوں کا احترام کرنے کی درخواست ہے۔
انہوں نے کہا ہے کہ لوگوں کا تعاون عوام کی صحت کا ضامن ہے۔ وزیراعلی نے کہا کہ صوبہ میں آج 440 کورونا کیس ہیں، ان 440 کیسز میں 151 سکھر فیز ون، 114 سکھر فیز ٹو اور 7 لاڑکانہ میں رکھے گئے زائرین شامل ہیں۔اس کے علاوہ سندھ حکومت نے کہا ہے کہ صوبے میں گندم کے ذخائر موجود ہیں، آٹے کا کوئی بحران نہیں، صوبے میں آٹے کی قلت کسی صورت نہیں ہونے دینگے۔ وزیرزراعت سندھ اسماعیل راہو نے جمعہ کو جاری کردہ اپنے بیان میں مزید کہا کہ بلا تعطل آٹے کی فراہمی کے لئے سندھ حکومت نے فلور ملزکو خریداری کی اجازت دے دی ہے، یہ اجازت عارضی طور پرمخصوص حالات کی وجہ سے دی گئی ہے،سندھ حکومت نے بھی گندم کی خرید اری شروع کردی ہے۔