متحدہ عرب امارات کی پھنسے ہوئے پاکستانیوں کو وطن واپس بھیجنے کی پیشکش، پاکستان کا کم وسائل کے باعث انکار

متحدہ عرب امارات نے مملکت میں پھنسے پاکستانیوں کو وطن واپس بھیجنے کی پیشکش کی ہے تاہم پاکستانی حکومت نے قرنطینہ کی ناکافی سہولیات کے باعث اپنے شہریوں کو ملک میں لانے سے انکار کردیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات میں موجود پاکستانی سفیر غلام دستگیر نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ متحدہ عرب امارات نے پیشکش کی ہے کہ وہ مملکت میں موجود پاکستانیوں کو واپس بھیجنے کیلئے تیار ہیں اور اس سلسلے میں پاکستان کی معاونت کی جائے گی لیکن پاکستانی محکمہ صحت سمیت کچھ ادارے تاحال اس قابل نہیں ہیں کہ وہ اتنی زیادہ تعداد میں مریضوں کو قرنطینہ کرنے کا انتظام کرسکیں۔
متحدہ عرب امارات میں پاکستانیوں کی بڑی تعداد موجود ہے جو کہ اپنے پیاروں کے پاس واپس آنا چاہتی ہے لیکن پاکستانی حکومت کم وسائل انہیں واپس نہیں لارہی ہے۔

مملکت میں موجود پاکستانیوں کا کہنا ہے کہ انہیں ایسے لگتا ہے جیسے وہ لاوارث ہوگئے ہیں اورانہیں اکیلا چھوڑ دیا گیا ہے۔ دوسری جانب متحدہ عرب امارات نے ان ممالک پر پابندیاں لگانے کا عندیہ بھی دیا ہے جو اپنے شہریوں کو واپس آنے کی اجازت نہیں دے رہے۔

اماراتی وزارتِ انسانی وسائل نے کہا ہے کہ جو ممالک اپنے شہریوں کو واپس آنے کی اجازت نہیں دے رہے ان کیلئے کوٹہ سسٹم متعارف کروایا جاسکتا ہے جس کے تحت ان ممالک سے مخصوص تعداد میں ہی افرادی قوت کو مملکت میں آنے کی اجازت دی جائے گی۔ واضح رہے کہ کورونا وبا کی وجہ سے متحدہ عرب امارات میں لاک ڈاؤن ہے اور روزی کمانے کیلئے جانے والے افراد بیروزگار ہورہے ہیں اور اب وہ اپنے وطن واپس جانا چاہتے ہیں تاہم پاکستان اور بھارت جیسے ممالک تاحال قرنطینہ کی ناکافی سہولیات کی وجہ سے انہیں واپس آنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔