پاکستان میں کورونا پھیلنے کی مقامی ٹرانسمیشن60 فیصد تک پہنچ گئی، ڈاکٹر ظفرمرزا

وفاقی معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ پاکستان میں کوروناپھیلنے کی مقامی ٹرانسمیشن60 فیصدہوگئی ہے، گزشتہ24 گھنٹے میں 497 مثبت کیسز رپورٹ ہوئے اور11 مریض انتقال کرگئے ہیں۔انہوں نے میڈیا بریفنگ کے دوران بتایا کہ یہ کہنا قبل ازوقت ہوگا کہ کراچی میں تمام اموات کورونا وائرس سے ہورہی ہیں، لیبارٹری ٹیسٹ کے بعد ہم کہہ سکتے ہیں کہ اموات کورونا ٹیسٹ ہورہی ہیں۔
جن ہسپتال میں بھی اموات ہوں گی وہاں ٹیسٹ کیے جائیں گے۔اگر کوئی موت ہونے میں کورونا علامات شامل ہوں تو اس کا ٹیسٹ کیا جائے گا۔سائنسی نقطہ نظر سے تحقیق کی جائے گی کہ تمام اموات کورونا سے ہی ہورہی ہیں۔ ملک میں کورونا ٹیسٹ کی صلاحیت بڑھ رہی ہے۔

آج ہم نے 6264 ٹیسٹ سب سے زیادہ کیے ہیں۔ پاکستان میں 10لاکھ کے قریب کٹس موجود ہیں، اس ماہ کے آخر تک 20 ہزار ٹیسٹ کرنے کے قابل ہوں گے۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ دنیا بھر میں کورونا مریضوں کی تعداد 22 لاکھ لوگوں میں پھیل چکی ہے، ایک لاکھ 47 ہزار اموات اور پانچ لاکھ 53 ہزار صحت یاب ہوچکے ہیں۔ اسی طرح پاکستان میں پچھلے 24 گھنٹے میں 6264 ٹیسٹ ہوئے، جن میں 497 مثبت کیسز رپورٹ ہوئے، اس طرح پاکستان کل کیسز کی تعداد7025 ہوگئی ہے۔نئے کیسز میں سب سے زیادہ تعداد سندھ 340 رپورٹ ہوئے۔ پنجاب 59، خیبرپختونخواہ 58، بلوچستان 23، اسلام آباد 9، گلگت بلتستان 8، آزاد کشمیرمیں کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا۔
پاکستان میں60 فیصد ٹرانسمیشن مقامی سطح پر ہوئی ہے۔ اسی طرح پچھلے 24 گھنٹے میں11اموات ہوئیں جس سے کل اموات 135 ہوگئی ہیں۔ اسی طرح 44 مریض تشویشناک حالت میں ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ عالمی سطح پر شرح اموات 6.7 فیصد ہے، پاکستان میں1.9 فیصد ہے۔ ڈاکٹر ظفر نے کہا کہ رمضان شریف آنے والا ہے، یہ بڑا خصوصی مہینہ ہے، کورونا کے باعث ہمیں رمضان شریف میں بڑی احتیاط کرنا ہوگی۔نمازتراویح، سحری اور افطاری کیلئے لائحہ عمل مرتب کیا جارہا ہے۔