چیئرمین فیڈمک میاں کاشف اشفاقکا ا سٹیٹ بینک آف پاکستان کی طرف سے شرح سود 9 فیصد کرنے کا خیرمقدم

چیئرمین فیصل آباد انڈسٹریل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ اینڈ منیجمنٹ کمپنی (فیڈمک) میاں کاشف اشفاق نے ا سٹیٹ بینک آف پاکستان کی طرف سے شرح سود 9 فیصد کرنے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے ملک کو کورونا وائرس کے منفی اثرات سے نکالنے اور کاروباری برادری کو صنعتی یونٹوں کی بحالی میں مدد ملے گی۔
ہفتہ کو جاری بیان میں میاں کاشف اشفاق نے کہا کہ وبائی صورتحال کے دوران تاجروں کی پریشانیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا شرح سود میں کمی کا یہ فیصلہ بہت اچھا ہے جس پر پم ان کے مشکور ہیں۔ مارک اپ ریٹ کا سنگل ڈیجٹ میں آنا صنعتی شعبے کے لئے بہت سود مند ہوگا اور اس سے صنعتی نمو کا ہدف حاصل کرنے میں مدد ملے گی ، مصنوعات کی لاگت میں کمی آئے گی اور بینکوں کے سرمائے کو بھی گردش میں لایا جاسکے گا۔

مارک اپ کی شرح مصنوعات کی لاگت کو متاثر کرتی ہے اس لئے پاکستانی مصنوعات بین الاقوامی منڈی میں ان ممالک کا مقابلہ نہیں کرسکتیں جو اپنی صنعتوں کو صفر یا ایک فیصد سے کم مارک اپ ریٹ پر سرمایہ مہیا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ زیادہ کاروباری لاگت کی وجہ سے نجی شعبے کو دھچکا لگا ہے۔ نئے صنعتی منصوبوں میں سرمایہ کاری اور موجودہ صنعت میں توسیع جمود کا شکار ہے اور بڑے پیمانے پر سرمایہ خطے کے ان ممالک میں منتقل ہوا ہے جہاں سرمایہ کاری اور کاروباری ماحول سازگار ہے اور مستقبل کے امکانات روشن ہیں۔
میاں کاشف اشفاق نے اس یقین کا اظہار کیا کہ وزیر اعظم عمران خان کی متحرک قیادت میں پاکستان کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا شدہ بحران سے نکل آئے گا، ان کی مالیاتی پالیسیوں سے خاص طور پر بزنس کمیونٹی کو بڑا ریلیف ملے گا، معیشت بحال ہو گی اور پاکستان بین الاقوامی منڈیوں میں اپنی جگہ بنانے میں کامیاب ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وباء کی وجہ سے فیڈمک کو بھی ضروری امور کی انجام دہی میں رکاوٹوں کا سامنا ہے۔
معاشی سرگرمیاں تیز کرنے اور برآمدات میں اضافے کے لئے ان منصوبوں کی تکمیل انتہائی اہم تھی مگر کورونا کی وجہ سے 2 ارب ڈالر کے برآمدی آرڈرز منسوخ ہو چکے ہیں۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ آزمائش کا یہ وقت بھی ختم ہو گا اور ہم پھر سے ملک کو خطے میں صنعتی سرمایہ کاری کا مرکز بنانے کی پوزیشن میں ہوں گے۔