49 دن کے لاک ڈاؤن کے بعد ہسپانوی باشندے سڑکوں پر امڈ آئے

49 دن کے لاک ڈاؤن کے بعد ہسپانوی باشندے سڑکوں پر امڈ آئے۔ ہفتے کے روز لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد لوگ سڑکوں پر سائیکلیں چلانے اور ورزش کرنے کے لیے بڑی تعداد میں نکل آئے۔ تفصیلات کے مطابق اسپین میں کئی ہفتوں سے جاری لاک ڈاؤن میں نرمی ہوتے ہی لوگوں کی بڑی تعداد نے سڑکوں رخ کر لیا۔ خبر ایجنسی کے مطابق اسپین میں لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد لوگ بھاری تعداد میں سڑکوں پر نکل آئے۔
ہسپانوی ٹی وی کی ایک ویڈیو میں کئی ہفتوں کے بعد پہلی مرتبہ سپین میں لوگوں کو سڑکوں پر سائیکل چلاتے، ورزش کرتے اور چلتے پھرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ اسپین میں حکومت نے حال ہی میں لاک ڈاؤن میں کچھ نرمی کا اعلان کیا تھا۔ یاد رہے کہ ایک ہفتہ قبل سپین میں بچوں کو باہر نکالنے کی اجازت دے دی گئی تھی۔

اسپین دنیا کے ان ممالک میں شامل ہے جہاں کورونا وائرس نے آبادی کو بری طرح متاثر کیا ہے۔

تازہ اعداد و شمار کے مطابق اسپین میں کورونا وائرس کے 2 لاکھ 40 ہزار سے زائد زیادہ مصدقہ کیسز تھے اور ملک میں مہلک وائرس سے تقریباََ 25 ہزار ہلاکتیں ہوئی ہیں۔

ہلے لوگوں کو صرف اشیائے خوردونوش کی خریداری کے لیے باہر نکلنے کی اجازت تھی یا گھر سے کام نہ کر پانے والوں کو دفاتر جانے کی اجازت تھی۔ گزشتہ ہفتے تک اسپین وہ واحد یورپی ملک تھا جہاں بچوں کے باہر نکلنے پر مکمل پابندی تھی۔
تاہم اب وہاں پر لاک ڈاؤن میں نرمی کر دی گئی ہے جس کے بعد لوگوں کا جم غفیر سڑکوں پر تقریباََ 7 ہفتوں کے لاک ڈاؤن کے بعد ورزش کرتے دیکھا گیا ہے۔ لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد ہسپانوی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ملک میں لاک ڈاؤن میں نرمی کر دی گئی ہے جس کے بعد شہریوں پر خود کو قابو میں رکھنے اور ذمہ داری کا مظاپرہ کرنے کی توقع ہے تاکہ کورونا سے پیدا ہونے والے خدشات کو کم کیا جا سکے۔