وفاقی حکومت کا آئندہ ہفتے سپریم کورٹ میں تحریک لبیک کے خلاف ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ

وفاقی حکومت آئندہ ہفتے سپریم کورٹ میں تحریک لبیک پاکستان کے خلاف ریفرنس دائر کرے گی۔اٹارنی جنرل آفس نے تحریک لبیک پاکستان کے خلاف ریفرنس کی تیاری پر کام شروع کر دیا ہے۔اٹارنی جنرل آفس کے ذرائع کے مطابق تحریک لبیک کے خلاف ریفرنس تیار کرنے میں چند روز لگ جائیں گے۔ سپریم کورٹ میں حقائق اور قانونی معاملات کو مدنظر رکھ کر جامع ریفرنس دائر کیا جائے گا۔
کالعدم تحریک لبیک کے سربراہ سعد رضوی کو بھی ان کی جماعت پر پابندی کئے جانے سے متعلق باضابطہ طور پر مطلع کر دیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق تحریک لبیک کے سربراہ سعد رضوی کو نوٹس جیل میں دیا گیا ہے۔کسی بھی جماعت پر پابندی کرنے کے فیصلے کے تین دن کے اندر مذکورہ جماعت کے سربراہ کو اس کی تحریری اطلاع دینا لازمی ہوتی ہے۔
خیال رہے کہ مذہبی جماعت تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ سعد رضوی کی گرفتاری کے بعد ملک بھر میں مظاہروں اور احتجاج کا سلسلہ شروع ہو گیا جس میں جلاؤ گھیراؤ بھی ہوا اور ملکی املاک کو نقصان بھی پہنچایا گیا۔

نیشنل کاؤنٹر ٹرارزم اتھارٹی (نیکٹا) اور محکمہ داخلہ کی رپورٹ میں بھی کہا گیا کہ تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) نے حکومتی رٹ تباہ کردی ہے۔ جبکہ حکومت کے چھ کے قریب اداروں نے تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کو پاکستان کی قومی سلامتی کے لیے سنگین خطرہ قرار دیا۔ ٹی ایل پی کے حالیہ احتجاج کے نتیجے میں نیکٹا، محکمہ داخلہ پنجاب، اسپیشل برانچ پولیس، انٹیلی جنس بیورو اور وزارت داخلہ اور خارجہ امور نے ٹی ایل پی کو دہشت گردی کا نیا دور قرار دیتے ہوئے اسے سیاسی تشدد اور قومی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیا اور کہا کہ یہ اب حکومتی رٹ کو تباہ کررہی ہے۔