پی ٹی آئی نے جن علاقوں سے چند سیٹیں جیتی وہاں دھاندلی کا پتا چلایا جائے، میاں نوازشریف

پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے مطالبہ کیا ہے کہ پی ٹی آئی نے جن علاقوں سے چند سیٹیں جیتی وہاں دھاندلی کا پتا چلایا جائے، مہنگائی، بےروزگاری، غربت افلاس کے حالات میں پاکستانی عوام تو پی ٹی آئی کو ووٹ نہیں دے گی، پھر کن چہروں نے پی ٹی آئی کو ووٹ دیا، مخالفین آئندہ الیکشن کیلئے مختلف حربے ڈھونڈ رہے ہیں۔
انہوں نے لندن میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کو ہرانے کیلئے دھاندلی ہوئی پچھلے الیکشن میں چالیس نشستوں پر دھاندلی سے نتائج تبدیل کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ کا بڑا شکر ہے کہ اللہ نے الیکشن میں ہماری عزت رکھی، تحریک انصاف اگر دھاندلی سے کچھ سیٹیں حاصل نہیں کیں تو وہ کون لوگ ہیں جو آج بھی پی ٹی آئی کو ووٹ دے رہے ہیں، ان پاکستانیوں کے چہرے بھی سامنے آنے چاہئیں، کہ یہ کیسے ووٹ دے رہے؟ جب غریب آدمی بھوک سے مر رہا ہے، رہنے کو گھر نہیں، مہنگائی نے چکنا چور کردیا ہے، بجلی کے بل نہیں دے سکتے، پھر ایسے لوگ پی ٹی آئی کو کیوں ووٹ دے رہے ہیں، اس لیے میں سمجھتا ہوں پی ٹی آئی نے جن حلقوں میں چند سیٹیں حاصل کی ہیں، دیکھنا چاہیے کہ اس میں دھاندلی کتنی ہوئی ہے؟ ایسے حالات میں تو کوئی پاکستانی عوام پی ٹی آئی کو ووٹ نہیں دے گی، یہ ایسے الیکشن ہوتے ہیں کہ جو بھی سٹنگ حکومت ہوتی ہے وہ جیت جاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا راستہ روکنے کی کوشش ہورہی ہے ہمارے مخالفین آئندہ الیکشن سے روکنے کیلئے مختلف حربے ڈھونڈ رہے ہیں بات بن نہیں رہی تو اب الیکٹرانک مشینوں کی بات ہورہی ہے آرٹی ایس بٹھانے والوں اور دھاندلی کرنیوالوں کو مشرف کی طرح ایک دن حساب دینا ہوگا، سب کچھ کرنے کے باوجود الیکشن جیتنے کیلئے آرٹی ایس بٹھانا پڑا ۔ نوازشریف نے ایک سوال پر کہا کہ میں پاکستان واپس ضرور جاؤں گا، انشاللہ ضرور جائیں گے پہلے بھی پاکستان سے سات سال باہر رکھا گیا تھا، سزا سننے کے بعد بھی پاکستان گئے تھے اب بھی پرواہ نہیں۔
اب اٹھ کھڑے ہونے کا وقت ہے، پاکستان جاکر قوم کو لیڈ کرنے کا وقت جلد آئے گا، میں اس سے گھبراتا نہیں ہوں۔ سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ ملک کو ایٹمی قوت بنانے اور معاشی خدمات کا میڈل یہ ملا کہ ملک سے باہر بیٹھنا پڑا، ہمیں کہا گیا چلو یہاں سے نکل جاؤ، نوازشریف مسلم لیگ ن برطانیہ کے صدر زبیر گل اور ناصر بٹ کی بھی تعریف کی۔ جنرل عاصم باجوہ میرے خلاف سازش کرنیوالوں میں شامل تھا اس سے رسیدیں لینی چاہئے کہاں سے اربوں کھربوں کے مالک بن گئے۔
انہوں نے کہا کہ میں آج بھی اپنے بیانیہ پر کھڑا ہوں، ملک میں قانون اور آئین کی پاسداری پر عمل ہی میرا بیانیہ ہے، ملک کو چلنے دو، جمہوری حکومت میں مداخلت نہ کرو، الیکشن میں دھاندلی نہ کرو ، ساڑھے 21کروڑ عوام کی مان کر ان کو حقوق دیں، اگر ایسا ہوجائے تو ملک دنوں میں ترقی کرجائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی موقع آیا تو ثبوت پیش کریں گے، ویسے جو کچھ منظر پر آچکا ہے میرا خیال ہے وہ ان جعلی کیسز اور سزاؤں کو جعلی قراردینے کیلئے کافی ہے۔